این پی ٹی معاہدے کی علیحدگی کیلیے ظریف کے بیان پر ایرانی ترجمان کا تبصرہ

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے این پی ٹی معاہدے سے ایران کی ممکنہ علیحدگی سے متعلق ایرانی وزیر خارجہ کے بیانات کی وضاحت کی.

سید عباس موسوی نے گزشتہ روز ایرانی پارلیمنٹ میں محمد جواد ظریف کے این پی ٹی معاہدے سے ایران کی ممکنہ علیحدگی سے متعلق بیانات پر روشنی ڈالی.

انہوں نے کہا کہ محمد جواد ظریف نے پارلیمنٹ میں جو کچھ کہا ہے گزشتہ سال کے مئی مہینے میں 4+1 ممالک کے سربراہوں کو ایرانی صدر کے لکھے گئے خط کا ایک حصہ ہے.

انہون نے مزید کہا کہ ایرانی صدر نے اس خط میں کہا کہ ایرانی جوہری معاملہ کو سلامتی کونسل کو بھیجنے اور جوہری معاہدے سے قبل پابندیوں کی واپسی کی صورت میں ایران بھی بطور معاوضہ NPT سے دستبردار ہوجائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ محمد جواد ظریف نے پیر کے روز کہا کہ اگر یورپ اپنے بلاوجہ رویے کو جاری رکھے اور ایرانی کیس کو سلامتی کونسل بھیجے تو ہم بھی این پی ٹی NPT معاہدے سے باہر نکلیں گے.
محمد جواد ظریف نے کہا کہ ایرانی وزارت خارجہ قانونی طریقے سے ایران جوہری معاہدے میں اختلافات کے حل کا میکنزم کے استعمال کے لیے یورپی ممالک کے حالیہ فیصلے کا جائزہ لے گی.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران نے گزشتہ سال کے مئی مہینے میں جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے بعد باضابطہ طور پر تنازعات کو حل کرنے کے طریقہ کار پر بات چیت کا آغاز کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 9 =