ایران کو کھیل مقابلوں کی میزبانی سے الگ کرنا پابندیوں کا تسلسل ہے

تہران، ارنا – ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ ایرانی فٹ بال کلبوں پر پابندی ہمارے معاشرے پر پابندیوں کا تسلسل ہے.

یہ بات "علی ربیعی" نے پیر کے روز اپنے ٹوئٹر پیج میں سیکیورٹی وجوہات کی بناء پر ایشین فٹ بال چیمپئن شپ میں شرکت کے لئے 4 ایرانی فٹ بال کلبوں کی میزبانی کو ہٹا دینے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایرانی ادارہ کھیل اور وزارت خارجہ ایرانی عوام کے حقوق کے دفاع کے لئے اس مسئلے کا جائزہ کر رہے ہیں.
ربیعی نے کہا کہ فٹ بال ایرانی زندگی کا ایک حصہ ہے اور بڑی ٹیمیں ہمارے ملک کی شناخت کا حصہ ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ سیکیورٹی کا فقدان محض بہانہ ہے، اسلامی جمہوریہ ایران بہت سارے ممالک سے زیادہ محفوظ ہے جو غیرمتحرک لیگ میں چیمپئن بننا چاہتے ہیں۔
یاد رہے کہ ایشین فٹ بال کنفیڈریشن (اے ایف سی) نے جمعہ کے روز ایک خط میں اعلان کردیا کہ "سیکیورٹی" کی وجہ سے ایران ایشین چیمپئن شپ مقابلوں کی میزبانی نہیں کرسکتا ہے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 3 =