15 جنوری، 2020 11:03 AM
Journalist ID: 2392
News Code: 83634833
0 Persons
یورپی اقدام ایک اسٹریٹجک غلطی ہے: ظریف

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ تنازعات کے حل کے لئے یورپ نے ایک نام نہاد میکنزم کے استعمال کا فیصلہ کرلیا ہے جسے قانونی حیثیت حاصل نہیں اور یہ ایک اسٹریٹجک غلطی بھی ہے.

یہ بات "محمد جواد ظریف" نے گزشتہ روز نئی دہلی کے دورے کے موقع پر جرمن مشاورتی وزیر "نیلس آنن" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے جوہری معاہدے کے وعدوں پر یورپ کی بدعہدی کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ تنازعات کے حل کے لئے یورپ کے اقدام حقوقی اور سیاسی لحاظ سے ایک اسٹریٹجک غلطی ہے.
جرمن مشاورتی وزیر نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ ہمارا مقصد عالمی جوہری معاہدے کا تحفظ ہے اور تین یورپی وزرائے خارجہ کے خط کا مطلب اس معاہدے کی تباہی نہیں ہے.
فریقین نے اس ملاقات کے دوران جوہری معاہدے پر عملدرآمد کی تازہ ترین تبدیلوں اور علاقائی مسائل سمیت افغانستان پر تبادلہ خیال کیا.
تفصیلات کے مطابق، تین یورپی ممالک سمیت برطانیہ، جرمن اور فرانس نے منگل کے روز ایک مشترکہ بیان میں کہا کہ جوہری معاہدے کے تحت تنازعات کے حل کے طریقہ کار سے استعمال کریں گے.
انہوں نے دعوی کیا کہ ان کا مقصد جوہری معاہدے کی تباہی نہیں، امریکہ کے ایران مخالف زیادہ سے زیادہ دباؤ کی پالیسی سے منسلک نہیں ہوں گے.
ان تین یورپی ممالک نے اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے تمام وعدوں کے عمل کرنے کے امید کا اظہار کیا.
یاد رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف گزشتہ رات پانچویں رائے سینا دائیلاگ فورم کی بین الاقوامی کانفرنس میں شرکت کے لئے نئی دہلی پہنچ گئے.
اس کانفرس کے موقع پر ایرانی وزیر خارجہ اپنے بھارتی اور دوسرے ہم منصبوں کیساتھ ملاقاتیں کریں گے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =