قریشی کے دورے تہران سے متعلق پاکستانی وزارت خارجہ کا بیان

اسلام آباد، ارنا – پاکستانی وزارت خارجہ نے ایران اور پاکستان کے وزرائے خارجہ کے درمیان ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران علاقائی امن کیلئے اسلام آباد کی کوششوں کا خیرمقدم کرتا ہے۔

پاکستانی وزارت خارجہ نے پیر کے روز اپنے جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ شاه محمود قریشی نے تہران کے دورے میں اپنے ایرانی ہم منصب کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران باہمی تعاون، خطے کے حالیہ تبدیلیوں اور ایران اور امریکہ کے درمیان موجودہ تناؤ پر بات چیت کی.

اس بیان نے شاہ محمود قریشی کے کہنے کے حوالے سے کہا کہ مشرق وسطی میں حالیہ تناؤ پر قابو پانے کے لئے دونوں فریقین کو صبر و تحمل کا مظاہرہ کرنا ہوگا.

قریشی نے کہا کہ خطے کو عدم استحکام اور کشیدگی سے بچانے کے لئے ضروری ہے کہ تمام فریقین سنجیدہ کوششیں کریں۔

اس بیان نے ایرانی وزیر خارجہ محمد کے بیانات کے حوالے سے کہا کہ محمد جواد ظریف نے خطے میں قیام امن کے لئے پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کی دلچسبی پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے امن کے قیام کے لیے پاکستان کی کوششوں کی حمایت کرتے رہیں گے.

شاہ محمود قریشی نے ایرانی صدر حسن روحانی اور ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کے ساتھ الگ الگ ملاقاتوں میں پاکستان کے لیے ایران کے ساتھ باہمی تعاون کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان ایران کے ساتھ اپنے تاریخی اور برادرانہ تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔

قریشی نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کے تناظر میں برصغیر کے معاملات کے حل اور اس حوالے سے ایران کے موقف کی تعریف کرتے ہوئے کشیدگی کی کمی کیلیے ایران کے طریق کار کو سراہا.

انہوں نے کہا کہ خطے میں حالیہ واقعات کی پیچیدگی کے باوجود ہم امن کو برقرار رکھنے کیلیے اپنی کوششوں کو جاری رکھیں گے.

قریشی نے کہا کہ ہم اپنی سرزمین کسی ملک خاص طور پر ایران کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اور ہرگز خطے کے لیے کوئی نقصان دہ اقدام اور تنازعہ میں شرکت نہیں کرے گا.

پاکستانی وزیر خارجہ نے تہران کے بعد آج سعودی عرب روانہ ہوں گے.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 6 =