کشیدگی کے خاتمے کیلئے سب کو مل کر تعاون کرنا ہوگا: ایرانی صدر

تہران، ارنا - صدر مملکت اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ خطے میں موجودہ صورتحال بہت حساس ہے لہذا سب کو کشیدگی کے خاتمے کے لئے مل کر تعاون کرنا ہوگا.

ڈاکٹر «حسن روحانی» نے گزشتہ روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے پاکستان کے وزیر خارجہ «مخدوم شاہ محمود حسین قریشی» کے ساتھ ایک ملاقات میں خطے کے نازک حالات کا حوالہ دیتے ہوئے مزید کہا ہے کہ ہم سب کو مل کر علاقائی امن و استحکام اور تناو میں کمی لانے کے لئے کردار ادا کرنا ہوگا.
روحانی نے تمام خطی ممالک کے ساتھ باہمی تعاون بڑھانے کے لیے ایران کی دلچسبی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں یقیں ہے کہ امت اسلامی کے درمیان اختلاف اور تنازعات کسی ملک کے مفاد میں نہیں اسی لیے ہم خطے میں امن و استحکام کے فروغ کے لئے پاکستان کی کوششوں کا مکمل خیرمقدم کرتے ہیں۔
ایرانی صدر نے کہا کہ جنگ اور کشیدگی خطے کے لیے خطرناک ہو سکتی ہے اور اسلامی جمہوریہ ایران اپنے مفادات کے دفاع کے لئے پوری طرح تیار ہے لیکن ہم نے کبھی بھی خطے میں کسی جنگ کو بھڑکانے کی کوشش نہیں کی لہذا امریکی اڈے کے خلاف ہمارا اقدام، امریکی جارحانہ کارروائی کا جوابی ردعمل تھا.
صدر روحانی نے پاکستان کے ساتھ تمام شعبوں میں باہمی تعلقات بڑھانے پر زوردیتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات ایران کے لئے بہت اہم ہیں اور ہمیشہ دونوں ممالک سخت دنوں میں ایک دوسرے کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں.
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم اپنی سرزمین کسی ملک خاص طور پر ایران کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے.
انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنے آپ کو اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے امن اور استحکام کا شراکت دار سمجھتا ہے اور ہرگز خطے کے لیے کوئی نقصان دہ اقدام اور تنازعہ میں شرکت نہیں کرے گا.
واضح رہے کہ پاکستانی وزیر خارجہ گزشتہ روز امام رضا کے روضے مطہر کی زیارت کے بعد مشہد پہنچ گئے جس کے بعد تہران کے دورے پر روانہ ہوگئے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 15 =