ایرانی سفیر اور افغان قائم مقام دفترخارجہ کی ملاقات، یوکرائنی طیارے پر گفتگو

کابل، ارنا- افغانستان میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایرن کے سفیر نے افغان قائم مقام دفترخارجہ سے ایک ملاقات میں ایران میں انسانی غلطی سے مار گرایے جانے یوکرائنی طیارے اور اس حادثے میں جاں بحق ہونے والے 13 افغان شہریوں پر تبادلہ خیال کیا۔

تفصیلات کے مطابق، اس ملاقات میں افغان قائم مقام دفترخارجہ "ادریس زمان" نے ایران میں یوکرائنی حادثے گر کر تباہ ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے بین الاقوامی ہم آہنگی گروہ کی تشکیل اور اس حادثے میں جاں بحق ہونے والے افغان مسافروں کے لواحقین کا جوابدہ ہونے پر بات چیت کی۔

 اس موقع پر ایرانی سفیر نے اس حادثے میں افغان شہریوں کے جاں بحق ہونے پر افغان حکومت اور عوام کو تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، اس حادثے کو جائزہ لینے کیلئے تیار ہے۔

خیال رہے ایران کی جانب سے عراق میں امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملے ختم ہونے کے کچھ گھنٹے بعد یوکرین کا طیارہ ایران کے امام خمینی ائیرپورٹ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا جس میں سوار 167 مسافر  اور 9 عملے جاں بحق ہوگئے تھے۔

مسافر طیارہ تہران سے یوکرین کے دارالحکومت کیف جا رہا تھا، طیارے میں 147 ایرانی اور 32 غیر ملکی مسافر سوار تھے۔

ایرانی مسلح افواج اندرونی تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچیں کہ میزائل انسانی غلطی کی وجہ سے فائر ہوا جس کے نتیجے میں یوکرائنی طیارہ تباہ ہوا، اور معصوم لوگ جاں بحق ہوگئے۔

ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا حادثہ افسوس ناک ہے، متاثرہ خاندانوں سے معذرت چاہتے ہیں، طاقت کے گھمنڈ میں مبتلا مہم جو امریکہ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 3 =