علاقائی سلامتی کی مضبوطی ایران کیلئے اہم ہے: صدر روحانی

تہران، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ خطے میں استحکام اور سلامتی کی بالادستی ہمارے لئے نہایت اہمیت کی حامل ہے.

یہ بات حسن روحانی نے گزشتہ روز امیر قطر شیخ تمیم بن حمد بن خلیفہ آل ثانی کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

ایرانی صدر نے اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے علاقائی استحکام اور سلامتی کی توسیع کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ علاقائی سلامتی کے قیام کا واحد راستہ ہمسایہ ممالک کے درمیان دوستی اور باہمی تعاون کو مضبوط بنانا اور غیر ملکی مداخلت کو روکنا ہے۔

انہوں نے میجر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کو امریکہ کی سب سے بڑی جنایت قرار دیتے ہوئے دنیا کے تمام ممالک خاص طور پر ہمسایہ ممالک سے اس جرم کی مذمت کرنے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ سلیمانی کا عراقی عوام اور حکومت کے مہمان کی حیثیت سے قتل، عراق کی خودمختاری کی ایک بہت بڑی توہین اور ایرانی قوم کے خلاف ایک بہت بڑی جنایت ہے۔

انہوں نے عراق سے امریکی فوجیوں کے انخلا سے متعلق عراقی پارلیمنٹ کا بل اور اس ملک کے عوام کی وسیع پیمانے پر حمایت بہت قابل قدر ہے۔

روحانی نے کہا کہ اگر امریکہ ایران کے جوابی اقدام کا جواب دیتا ہے تو بھر پور جوابی کارروائی کریں گے، امید ہے کہ امریکہ ایک اور غلطی سرزد نہ ہوئے۔

صدر روحانی نے مزید بتایا کہ امید ہے کہ اس نازک حالات میں تمام امن پسند ممالک امریکہ کو قانون اور انسانیت کی طرف حوصلہ افزائی کے لیے ایک سنجیدہ اقدام اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ کی طرح ہم ظالمانہ پابندیوں کے خلاف مقابلہ کے لیے قطری عوام اور حکومت کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور باہمی تعاون کو مزید مضبوط بنانے کے خواہاں ہیں۔

اس موقع میں قطری امیر نے اپنے ملک کی پابندیوں کے دوران ایرانی حکومت اور قوم کی حمایتوں کو فراموش نہیں کریں گے اور ہم ایران کے خلاف کسی بھی کشیدگی کے ساتھ مخالف ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 5 =