8 جنوری، 2020 3:49 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83626525
0 Persons
ایران اور ترکی کا علاقائی صورتحال پر تبادلہ خیال

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران اور ترکی کے وزرائے خارجہ نے ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران، خطے کی حالیہ تبدلیوں بالخصوص امریکی بیسز پر ایران کی جوابی کاروائی سے متعلق تبادلہ خیال کیا.

تفصیلات کے مطابق "محمد جواد ظر یف" اور "مولود چاووش اوغلو" نے بدھ کے روز خطے کی تازہ تریں صورتحال سمیت عراق میں امریکی فوجی اڈے کیخلاف ایرانی کی جوابی کاروائی پر تبادلہ خیال کیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس سے پہلے بھی آسٹریا اور ملائشیاء کے وزرائے خارجہ نے اپنے ایرانی ہم منصب کیساتھ الگ الگ ٹیلی فونک رابطوں میں علاقے کی حالیہ صورتحال پر بات چیت کی۔

واضح رہے کہ پاسداران انقلاب کی فضائیہ نے گزشتہ رات امریکی حملے میں جام شہادت نوش کرنے والے جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کا بدلہ لیتے ہوئے عراق میں امریکیوں کے زیر استعمال فوجی اڈوں پر میزائل حملے کردیے۔

امریکی محکمہ دفاع پینٹا گون نے بھی عراق میں امریکی فوج کے اڈے پرحملے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ حملہ مقامی وقت کے مطابق صبح ساڑھے 5 بجے ایران سے کیا گیا جس میں ایران نے عراق میں 2 فوجی اڈوں پر ایک درجن سے زائد میزائل فائر کیے اور عین الاسد اور اربیل میں دو عراقی فوجی اڈوں کو نشانہ بنایا گیا۔

ایران نے امریکی فوجی اڈوں پر حملوں کے آپریشن کو "شہید سلیمانی" کا نام دیا یعنی اسے "آپریشن سلیمانی" کہا گیا جو کہ جنر ل قاسم سلیمانی کی تدفین کے چند گھنٹوں کے بعد کیا گیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 13 =