امریکی دہمکیوں پر اپنے حق دفاع کا استعمال کرتے رہیں گے: ایران

نیو یارک، ارنا - اقوام متحدہ میں تعینات ایران کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ امریکی دہمکیاں علاقائی امن و سلامتی کے لئے نہایت خطرناک ہیں اور اس کے مقابلے میں ہم اپنے حق دفاع کا استعمال جاری رکھیں گے.

یہ بات مجید تخت روانچی' نے آج بروز بدھ امریکی دہشتگردی حملے کے نتیجے میں جنرل سلیمانی کی شہادت کے بعد اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل "انٹونیو گوترش"کے نام سے ایک  احتجاجی مراسلے میں کہی.

انہوں نے اس خط میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو ٹرمٹ کے اشتعال انگیز بیانات جیسے ایران پر فوجی حملے کی دہمکی پر احتجاج کیا.

انہوں نے امریکی صدر ٹرمپ کے بیان،کہ ایران کے جوابی ردعمل کی صورت میں ایران کے 52 اہم ثقافتی مقامات پر حملہ کریں گے، پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ثقافتی مقامات پر حملہ کرنا جنگی جرم کی واضح مثال اور بین الاقوامی قوانین کے خلاف ہے.

قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آج بروز اتوار کو ایک ٹوئٹر پیغام میں دعوی کیا کہ ایران نے حملہ کیا تو اس کے 52 اہم اور حساس ترین ثقافتی مقامات کونشانہ بنائیں گے۔

ایرانی مندوب نے کہا کہ اس غیر مستحکم علاقے(مشرقی وسطی) میں مزید فوج اور نئے جنگی سازوسامان بھیجنا بھی موجودہ پیچیدہ صورتحال کو پیچیدہ بناتا ہے۔

انہوں نے گزشتہ 40 سالوں میں ایران کے خلاف امریکی مختلف سازشوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم کبھی کشیدگی اور جنگ کے درپے نہیں ہیں لیکن خطے میں کسی فوجی مہم جوئی کا بھرپور جواب دیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اپنی قوم اور علاقائی سالمیت کے دفاع کے لیے پرعزم ہے.

تخت روانچی نے کہا کہ امریکہ کی غیر ذمہ دارانہ پالیسیاں اور غیر قانونی اقدامات نہ صرف بین الاقوامی امن و سلامتی کی بنیادوں کو خطرے میں ڈالتے ہیں بلکہ بین الاقوامی امن و سلامتی کے لئے بھی حقیقی خطرہ ہیں۔

ایرانی نمائندے نے کہا کہ عالمی برادری کو اس حالات کو نظر انداز نہیں کرنا ہوگا اور امریکہ سے مطالبہ کرنا چاہیے کہ مشرقی وسطی سے اپنی فورسز کو نکل کرے.

ایران نے آج کی علی الصبح عراق میں امریکہ کے دہشتگردی حملے کے جوابی ردعمل میں عراق میں موجود امریکی فوجی عین الاسد اڈے پر درجنوں بیلسٹک میزائلوں سے حملہ کیے.

واضح رہے کہ جمعہ کی علی الصبح کو عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب  کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر "ابومهدی المهندس" شہید ہوگئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 13 =