خطے میں امریکہ کے شیطانی وجود کے خاتمے کا آغاز ہوچکا ہے: ایران

تہران، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے تہران ریجنل ڈائیلاگ فورم کی افتتاحی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مغربی ایشیائی خطے میں امریکہ کی شیطانی موجودگی کے خاتمے کا آغاز ہوچکا ہے.

یہ بات محمد جواد ظریف نے آج بروز منگل تہران میں منعقدہ علاقائی مکالمہ فورم میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا امریکہ قاسم سلیمانی کے قتل سے ایک بار پھر ثابت کردیا کہ امریکہ بین الاقوامی قواعد و ضوابط کا کوئی احترام نہیں کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹرمپ بے شرمانہ ایرانی ثقافتی مقامات پر حملے کی دہمکی دیتا ہے جبکہ یہ مراکز تہذیب اور انسانی ثقافت کا مشترکہ ورثہ ہیں۔

«محمد جواد ظریف» نے مزید کہا کہ کہ امریکہ نے اعلی ایرانی کمانڈر کو قتل کرکے اپنے آپ کو نا ختم ہونے والی مصیبت میں ڈال دیا.
انہوں نے کہا کہ جلد بدیر مشرق سے لے کر مغرب اور پوری دنیا امریکہ کو گریبان سے پکڑلیں گے.

ظریف نے کہا کہ ٹرمپ نے اس بار ایک بہت بڑا جوا کھیل کیا ہے اور اس کو جان لینا چاہیے کہ اللہ تعالی کے وعدے کے مطابق حق ہمیشہ کامیاب ہوگا.

انہوں نے کہا کہ ایران یقینی طور پر امریکہ کے اس دہشتگردی حملے کا بروقت فیصلہ کن جواب دے گا لیکن علاقائی ممالک جاں لیں کہ ہم بدستور علاقائی امن و سلامتی کے تحفظ کے لیے کوشاں ہیں.

اس اجلاس میں عمانی وزیر خارجہ یوسف بن علوی، افغان سابق صدر حامد کرزای، نائیب ایرانی وزیر خارجہ 'سید عباس عراقچی' ، ناروے اور روس کے سفیر اور دوسرے ممالک کے کچھ سفیروں نے حصہ لیا ہے.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =