ایرانی ثقافتی مراکز کیخلاف ٹرمپ کی دھمکی جنگی جرم ہے: ہیومن رائٹس واچ

تہران، ارنا- ہیومن رائٹس واچ نے کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کیجانب سے ایران میں اہم ثقافتی مراکز پر حملہ کرنے کی دھمکی کا اگر نفاذ ہوجائے تو وہ ایک جنگی جرم ہے۔

ہیومن رائٹس واچ نے مزید کہا کہ امریکی حکومت کو فوری طور بین الاقوامی جنگی قوانین پر پابند رہنے کا اعلان کرنا چاہیے۔

اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے نگران ادارے کی ڈپٹی ڈائریکٹر "آندرا پراسو" نے کہا کہ ٹرمپ کو عوامی طور پر ایران کے ثقافتی اثاثوں کیخلاف اپنی دھکمیوں کی غلطی کا اعتراف کرنا چاہیے اور ان کو واضح کرنا چاہئے کہ وہ جنگی جرائم کا لائسنس یا حکم جاری نہیں کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی محکمہ دفاع کو بھی جنگ کے قوانین کی پاسداری اور قانونی فوجی احکامات پرعمل پیرا ہونے کے عزم پر واضح طور پر زور دینا چاہئے۔

جنگی قوانین میں عام شہریوں پر دانستہ طور پر حملے اور فوجی مقاصد کیلئے ان کے استعمال پر پابندی عائد ہے۔

 اس کے علاوہ لوگوں کیلئے بڑے اہمیت کا حامل ثقافتی ورثے کے اشیاء کو نشانہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔ 

جینوا کنونشن کے پہلے پروٹوکول کا آرٹیکل نمبر 53 میں ثقافتی چیزوں کیخلاف ہر کسی طرح کے خصمانہ اقدام پر پابندی عائد ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آج بروز اتوار کو ایک ٹوئٹر پیغام میں دعوی کیا کہ ایران نے حملہ کیا تو اس کے 52 اہم اور حساس ترین ثقافتی مقامات کونشانہ بنائیں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 15 =