امریکی دہشتگردی نے دنیا کو خطرے میں ڈال دیا ہے: پاکستانی پروفیسر

اسلام آباد، ارنا - بین الاقوامی امور کے پاکستانی پروفیسر کا کہنا ہے کہ امریکہ کے حالیہ دہشتگردی حملے سے جس میں اعلی ایرانی کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی شہید ہوئے تھے، پورے خطے اور عالمی سطح پر سنگین خطرات نظر آرہے ہیں.

ان خیالات کا اظہار پاکستان کی قائد اعظم یونیورسٹی کے پروفیسر برائے تعلقات عامہ "قندیل عباس" نے ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی دہشتگردانہ حملے میں جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت سے امریکہ کو سنگین نتایج اور خطرات لاحق ہوں گے۔

قندیل عباس نے اس بات پر زور دیا کہ عراقی کی خاک میں امریکی دہشتگردانہ حملے کے نتیجے میں جنرل سلیمانی کی شہادت، صدر ٹرمپ کے غلط رویے کے نتیجے سے وقوع پذیر ہوگئی۔

انہوں نے امریکہ کے اس اقدام کو بزدلانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے اس اقدام کیساتھ تمام بین الاقوامی قوانین کی خلاف وزی کرتے ہوئے بغداد اور واشنگٹن کے درمیان تمام طے پانے والے معاہدوں کی تباہی کا باعث ہوگیا۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستانی محکمہ خارجہ نے گزشتہ روز پاسداران انقلاب کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت پر گہرے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ہر کسی یکطر فہ فوجی اقدام سے گزیر کرنے کا مطالبہ کیا۔

 واضح رہے کہ جمعہ کی علی الصبح کو عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب  کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر "ابومهدی المهندس" شہید ہوگئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 12 =