امریکہ، داعش کا انتقام حشد الشعبی سے لے رہا ہے: آیت اللہ خامنہ ای

تہران، ارنا - سپریم لیڈر ایران نے عراقی فورسز الحشد الشعبی پر حالیہ امریکی حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے فرمایا ہے کہ امریکہ داعش کے دہشتگردوں کا انتقام الحشد الشعبی سے لے رہا ہے.

یہ بات قائد اسلامی انقلاب نے بدھ کے روز تہران میں ایران بھر سے آئے ہوئے نرسوں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے فرمایا کہ امریکہ، شام اور عراق میں کیا کررہا ہے. عراق اور خطے میں امریکیوں سے قوموں کی نفرت ایک جائز طرز عمل ہے.
انہوں نے فرمایا کہ حشدالشعبی فورسز نے امریکی حمایت یافتہ دہشتگرد گروہ داعش کا خاتمہ کیا اور اسی وجہ سے امریکہ ان دہشتگردوں کا انتقام حشدالشعبی سے لے رہا ہے.
انہوں نے کہا کہ مجھ سمیت ایرانی قوم اور حکومت عراق میں امریکہ کے حالیہ سفاکانہ اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں.
حضرت‌ آیت الله خامنه ای نے مزید فرمایا کہ گزشتہ دنوں عراق کی عوامی فورس حشدالشعبی کے ٹھکانوں پر امریکی حملے کے ردعمل میں عراقی عوام نے بغداد امریکی سفارتخانے پر دھاوا بول دیا اور اس کے بعد امریکی صدر نے یہ ٹوئیٹ کیا کہ ''ایران امریکی سفارتخانے کے واقعے کا قصور وار ہے اور ہم ایران کو جواب دیں گے''.
قائد انقلاب نے امریکی صدر کی اس ہرزہ سرائی کے جواب میں فرمایا کہ پہلی بات تو یہ ہے کہ آپ غلطی پر ہیں کیونکہ اس واقعے کا ایران سے کوئی تعلق نہیں دوسری بات یہ ہے کہ آپ بہت غیر منطقی ہیں.
انہوں نے مزید فرمایا کہ امریکہ نے خطے میں متعدد جرائم اور مکروہ سازشوں کا مرتکب ہے اسی لئے علاقائی اقوام خاص طور پر عراق، شام اور افغانستان کے عوام امریکیوں سے نفرت کرتے ہیں.
سپریم لیڈر نے مزید فرمایا کہ اگر اسلامی جمہوریہ ایران کسی بھی ملک کے خلاف مقابلہ کرنے کا فیصلہ کرے تو وہ واضح طور پر اس پر عمل کرے گا تاہم سب جانتے ہیں کہ ہم ملک اور قوم کے مفادات کے پابند ہیں لہذا ان مفادات کے خلاف کسی بھی خطرے اور دہمکیوں کا فوری جواب دیں گے.
یاد رہے کہ گزشتہ اتوار کے روز امریکہ نے جنگی طیاروں کے ذریعے عراق میں الحشد الشعبی فوجی اڈے پر حملے کئے جس کے نتیجے میں کم سے کم 25 افراد شہید ہوئے.
اس حملے کے بعد گزشتہ روز سینکڑوں مشتعل مظاہرین نے بغداد میں قائم امریکی سفارتخانے کو گھیرے میں لیا اور امریکی جھنڈے کو نذر آتش کرنے کے علاوہ عمارت میں داخل ہونے کی بھی کوشش کی.

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 10 =