1 جنوری، 2020 11:03 AM
Journalist ID: 2393
News Code: 83616278
0 Persons
امریکہ خطے میں تباہ کن پالیسی ترک کرے: ایران

تہران، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ عراقی دارالحکومت میں جو صورتحال سامنے آئے اس پر امریکیوں نے بے شرمی کے ساتھ عراقی قوم کی توہین کررہے ہیں جبکہ امریکہ کو خطے میں تباہ کن پالیسی کو ترک کرنا ہوگا.

یہ بات سید عباس موسوی نے منگل کے روز عراق میں ہونے والے واقعات میں مداخلت کے لیے ایران پر امریکی حکام کے جھوٹے الزامات پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے کہا کہ حیرت کی بات یہ ہے کہ امریکہ، عراق میں کم از کم 25 افراد قتل عام اور متعدد عراقی عوام کے زخمی ہونے کے بعد اپنے اس وحشیانہ اور ظالمانہ اقدام کے خلاف عراقی قوم کے احتجاج کو اسلامی جمہوریہ ایران سے منسوب کرتا ہے.
انہوں نے امریکہ کے اس دعوے کو عراقی عوام کی توہین قرار دیتے ہوئے مزید کہا کہ امریکہ توقع کرتا ہے کہ عراقی عوام ان سارے جرائم کے خلاف خاموش رہیں.
موسوی نے بتایا کہ کہ امریکہ، ایک طرف سے عراق کی خودمختاری کو نظر انداز کر دیا ہے اور دوسری طرف عراق کے سابق آمر 'صدام حسین' کی حمایت، داعش کی تخلیق اور عراقی قوم کے قتل عام میں اپنے کردار کو فراموش کردیا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ وہ(امریکیوں) یہ بھول گئے ہیں کہ عراقی قوم انہیں ابھی بھی 'غاصب' سمجھتے ہیں.
انہوں نے اپنے بیان کے اختتام میں ہمارے ملک کے خلاف امریکی الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کو کسی بھی غلط اقدام پر خبردار کر کے خطے میں اپنی تباہ کن پالیسیوں پر نظر ثانی کرنے کا مطالبہ کیا.
یاد رہے کہ امریکہ نے حالیہ دنوں میں عراق میں الحشد الشعبی فورسز کے ٹھکانوں پر حملہ کردیا جس کے بعد ایران نے اس حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی اس جارحیت کو دہشت گردی کی واضح مثال ہے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 7 =