عراق میں الحشدالشعبی فورسز پر امریکی جارحیت، ایران کی مذمت

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے عراق میں الحشد الشعبی فورسز پر امریکی جارحیت کو کھلی دہشتگردی قرار دیتے ہوئے اس کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے.

ایرانی دفتر خارجہ کے ترجمان سید عباس موسوی نے عراق میں الحشد الشعبی فورسز کے ٹھکانوں پر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی اس جارحیت کو دہشت گردی کی واضح مثال ہے.

انہوں نے امریکی حکومت سے اپیل کی ہے کہ عراقی سالمیت، یکجھتی اور خودمختاری کا احترام کر کے اس ملک کے اندرونی امور میں اپنی مداخلت کو بند کرے.

موسوی نے کہا کہ ان حملوں نے ایک بار پھر تکفیری دہشتگرد گروپ داعش سے لڑنے کے لیے امریکی جھوٹ دعوے کی توثیق کردی.

ایرانی ترجمان نے کہا کہ امریکہ نے ان حملوں کے ساتھ دوسرے ممالک کی خودمختاری کو نظر انداز کرنے اور دہشتگردی سے اپنی بھرپور حمایت کا مظاہرہ کیا ہے اور اسے اس غیر قانونی اقدام کے نتائج کی ذمہ داری کو قبول کرنا چاہیے.

موسوی نے خطے میں غیر علاقائی فورسز کی موجودگی کو بدامنی اور تشدد کا سبب قرار دیتے ہوئے بتایا کہ امریکہ کو اپنی غاصبانہ موجودگی کو خاتمہ دینا ہوگا.

انہوں نے اپنے بیان کے اختتام میں عراق کی سالمیت اور حاکمیت کی حمایت کے لیے ایران کا موقف اعلان کرتے ہوئے اس دہشتگردی حملے کے شہدا اور جان بحق ہونے والے کے لواحقین کے ساتھ ہمدری کا اظہار کیا.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 6 =