ایران میں حکومت عیسائی برادری کی حمایتی ہے: لبنان کے مسیحی پیشوا

بیروت، ارنا - لبنان میں عیسائی برداری کے اعلی رہنما نے کہا ہے کہ ایرانی صدر نے ہمیشہ عیسائیوں کی تاریخی موجودگی کی حمایت کی ہے.

یہ بات 'آرام اول کیشیشیان' نے گزشتہ روز بیروت میں تعینات ایرانی ثقافتی اتاشی 'عباس خامہ ‌یار' کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ ایرانی حکام کی عقلمندی اور آرمینی باشندوں کی بیداری کی وجہ سے ایرانی حکومت اور عیسائیوں کے درمیان کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

کیشیشیان نے کہا کہ عراق ، شام ، لبنان اور ایران میں عیسائیوں پر ظلم نہیں کرتے ہیں لیکن کچھ مغربی ممالک اس بات کو نہیں مانتے ہیں اور داعش کی مثال کی طرف اشارہ کرتے ہیں جبکہ داعش بنیادی طور پر مسلمانوں کے لئے خطرہ ہے۔

ایرانی ثقافتی اتاشی نے ایرانی حکومت اور عیسائی باشندوں کےدرمیان گہرے روابط کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی انقلاب سے پہلے عیسائیوں کے رہنما، پیرس میں بانی انقلاب'امام خمینی 'رح' کےساتھ ملاقات کر کے انقلاب کی کامیابی کے لیے عیسائیوں کے کردار کے حوالے سے ایک سوال پوچھا جس کے جواب میں امام خمینی نے کہا کہ آرمینی شہری ایران اور ایرانی قوم کا ایک جزو ہیں.

خامہ یار نے آرمینیوں کے بارے میں بانی انقلاب کے بیان، کہ آرمینین ایرانی معاشرے کا ایک لازمی جزو ہیں جنہوں نے شہدا کو اپنے وطن کے لئے وقف کیا ہے اور ایران کی سائنسی، تکنیکی اور ثقافتی تعلقات کو آگے بڑھانے میں اپنا موثر کردار ادا کیا ہے، کا ذکر کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 15 =