ایران کی بدعت اور ایجادات کے شعبے میں دنیا کی 61 ویں پوزیشن

دزفول، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران 2019ء میں سائنس کی پیدوار کے حوالے سے دنیا کی سولویں پوزیشن پر کھڑا ہے اور ساتھ ساتھ بدعت اور ایجادات کے شعبے میں بھی دنیا کی 61 ویں پوزیشن کو اپنے نام کرلیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار ایرانی تحقیقاتی تنظیم میں تعینات ڈائریکٹر مینجنگ برائے تعلیم اور زراعت کی ترقی "مجید ولدان" نےاتوار کے روز جنوبی شہر دزفول میں زرعی مصنوعات کی پیکیجنگ اور مارکیٹنگ سے متعلق منعقدہ سمینار میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے 2011ء میں سائنس کی پیداواری سے متعلق دنیا کی سترہویں اور علاقے کے پہلی پوزیشن کو حاصل کر لیا تھا اور 2017ء میں ایک درجے بہتری کیساتھ دنیا کی سولویں پوزیشن پر کھڑا ہے۔

ولدان نے مزید کہا کہ ایران نے بدعت اور ایجادات کے شعبے میں 2013ء، 2014 اور 2019ء کے سالوں میں بالترتیب دنیا کی 113 ویں، 120 ویں اور 61ویں پوزیشن کو اپنے نام کرلیا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ دنیا میں سائنسی ترقی اور پیداوار کے لحاظ سے اسلامی جمہوریہ ایران نے اسلامی ممالک کے درمیان پہلی پوزیشن حاصل کی ہے.

 اسلامی جمہوریہ ایران میں سائنسی پیداوار سے متعلق قریب چار ہزار مراکز سرگرم ہیں جس کی وجہ سے خطے میں سائنسی ترقی کے حوالے سے ایران کو پہلی پوزیشن حاصل ہوئی ہے.

 انقلاب کے 40 سال گزرنے کے بعد بھی ایران کے خلاف دشمنی اور پابندیوں سے کوئی نتیجہ نہیں نکلا بلکہ ایرانی قوم نے سائنس اور ٹیکنالوجی میں حیرت انگیز کامیابیاں حاصل کیں.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 2 =