تین ملکی مشقیں سمندری سلامتی کیلئے ہمارے عہد کی نشاندہی ہے: ظریف

تہران، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ روس اور چین کے ساتھ مشترکہ بحری مشقیں سمندری خطے میں اہم آبناوں کی سلامتی کے لئے ہمارے عہد کی نشاندہی ہے.

"محمد جواد ظریف" نے ایک ٹوئٹر پیغام اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، خلیج فارس میں قیام سلامتی سے متعلق ہمسایوں سے تعاون پر آمادہ ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ایران نے بہت عرصوں پہلے خلیج فارس میں قیام امن سے متعلق اپنی آمادگی کا اظہار کردیا ہے اور حالیہ مہینوں میں ایرانی صدرکی تجویزہ کردہ  ہزمر امن منصوبہ بھی اس سلسلے کی کڑی ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ بحر ہند کے شمال میں ایران، روس اور چین کی مشترکہ بحری مشقوں کا آج بروز جمعہ کو آغازکیا گیا، یہ مشقیں 3 دن تک جاری رہیں گی۔

اسلامی جمہوریہ ایران کی بحریہ کے ڈپٹی آف نیول آپریشنزاورمشترکہ بحری مشقوں کے ترجمان نے اس حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مشترکہ بحری مشقیں 17 ہزار کلومیٹر کے رقبے پر محیط ہیں اور ان مشقوں کا مقصد بحری سلامتی اور سکیورٹی کو مزید مضبوط بنانا ہے۔

طحانی نے کہا کہ بحر ہند کا شمالی حصہ میں پائیدار امن و سلامتی برقرار ہے اور اس میں ایران کی مسلح افواج اور خاص طور پر ایرانی فوج اور پاسداران انقلاب کی بحریہ کا اہم کردار ہے۔

اس سے قبل اسلامی جمہوریہ ایران کی بحریہ کے سربراہ ایڈمیرل "حسین خانزادی" نے کہا تھا کہ ایران ، روس اور چین کی مشترکہ بحری مشقیں چابہار بندرگاہ سے بحر ہند تک آج سے تین دنوں تک جاری رہیں گی۔

 انھوں نے کہا کہ تینوں ممالک کی مشترکہ بحری مشقیں، بحری اقتدار کا مظہر ہے۔

 ایڈمیرل خانزادی نے کہا کہ ان مشقوں کا مقصد سمندری سکیورٹی اور امن و سلامتی کو یقینی بنانا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 3 =