5 ہزار غیر ملکی سیاحوں کی علاقے شہداد کی سیاحتی دلچسبیوں کی آمد

کرمان، ارنا- رواں سال کے ابتدائی 9 مہینوں کے دوران، 5 ہزار غیر ملکی سیاحوں نے ملک کے جنوب مغربی صوبے کرمان میں واقع علاقے "شہداد" کی سیاحتی دلچسبیوں کا رخ کرلیا جس میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 20 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار صوبے کرمان میں قائم ادارہ برائے ثقافتی ورثے، سیاحتی اور دستکاری صنعت کے دائریکٹر مینجر "فریدون فعالی" نے ارنا نمائندے کییساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ رواں سال کے دوران، 2 ہزار 600 غیر ملکی سیاحوں نے علاقے شہداد میں قائم ایکوٹورازم یونٹس میں رہائش اختیار کیا ہے اور اس علاقے میں موجود 37 ایکوٹورازم رہائش گاہوں نے سیاحوں کو اپنی طرف راغب کردیا ہے۔

فعالی نے کہا کہ صحرائے لوط میں بہت سارے منفرد قدرتی اور تاریخی پرکشش مقامات ہیں اور حالیہ برسوں میں بھی اس کو عالمی ثقافتی تنظیم یونیسکو کے ورثے میں رجسٹر کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ رواں سال کے ابتدائی مہینوں سے اب تک 150 ہزار ملکی اور غیر ملکی سیاحوں نے صحرائے لوت کی سیاحتی دلچسبیوں کا رخ کرلیا ہے۔

صحرائے لوت میں واقع علاقے "کلوت شہداد" منفرد قدرتی حسن اور انوکھے پودوں کی وجہ سے اس علاقے کی سیاحتی دلچسبیوں میں سے ایک ہے۔ کلوت شہداد کی وہ خصوصیت جو دنیا بھر میں مشہور ہے یہ ہے کہ وہ کرہ ارض کا سب سے زیادہ گرم مقام ہے۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران کے جنوب مشرقی علاقوں میں واقع صحرائے لوت قریب 40 ہزار کلومیٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے اور اس صحرا کے کچھ حصے صوبے کرمان، سیستان و بلوچستان اور خراسان جنوبی میں واقع ہوئے ہیں۔

سنہ 2014ء میں ایرانی صحرائے لوت کو عالمی ثقافتی تنظیم یونیسکو کے ورثے میں رجسٹر کیا گیا.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 2 =