24 دسمبر، 2019 7:39 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83607237
0 Persons
4 مہینے بندش کے بعد ایران عراق "سومار" سرحد کھول دی گئی

قصر شیرین، ارنا- ایران اور عراق کے درمیان سرحدی بازار سومار کو عراقی فریق کیجانب سے 4 مہینے بندش کے بعد دوبارہ کھول دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق سومار سرحدی بازار کو از سرنو کھولنے کی تقریب میں عراقی عہدیداروں، سومار کسٹم اور بازار کے مینجرز بھی شریک تھے۔

رپورٹ کے مطابق عراقی کسٹم کے چیف "کاظم العقابی" نے آج بروز منگل کو عراقی حکام کو سومار سرحد کو دوبارہ کھولنے کا حکم دیا ہے اور اس سرحد کو دوبارہ کھولنے کی تقریب میں دیالہ کے صوبائی گورنر جنرل "مثنی تمیمی" اور علاقے بلدوز کے گونرر جنرل "محمد معروف" بھی شریک تھے۔

العقابی نے سومار سرحد کی از سرنو تقریب کی سائڈ لائن میں منعقدہ ایک اجلاس میں  دونوں فریقین کیجانب سے مصنوعات کی لین دین سے متعلق نیکی نیتی سے پیش آنے اور باہمی تعاون کے فروغ پر زور دیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ سومار سرحدی بازار رواں سال کے 19 آگست میں عراقی وزیر اعظم کے حکم سے بند کی گئی تھی۔

واضح ہے کہ رواں سال کے 7 اگست کو سرحدی بازار سومار ایران اور عراق کے درمیان تجارتی تعلقات کے فروغ اور مسافروں کی آمد و رفت کیلئے مزید سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے باضابطہ طور پر کھلا گیا۔

ایران کے شمال مغربی صوبے کرمانشاہ کے علاقے گیلانغرب کے گورنر جنرل  نے سومار سرحد کے کردار کو ایران اور عراق کے درمیان تجارتی لین دین کے حوالے سے انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال کے دوران صوبے کرمانشاہ سے عراق کو برآمدات کے 48 فیصد کا حصہ سومار سرحد سے ہوئی ہے۔

 انہوں نے سومار کے سرحدی بازار کو سرکاری طور پر کھولنے کے اقدام کو علاقے گیلانغرب کی خوشحالی اور ترقی میں انتہائی موثر قرار دے کر اس امید کا اظہار کردیا کہ اس اقدام کے ذریعے اس علاقے میں کمیوں اور خامیوں کا خاتمہ ہوگا۔

گیلانغرب کے گورنر جنرل نے مزید کہا کہ سومار کی سرحد قریب 40 ایکڑ کے رقبے پر پھیلی ہوئی ہے جس کے انفراسٹرکچر کی توسیع کیساتھ بہت جلد اسی سرحد میں تجارتی گیٹ اور کسٹم کا قیام ہوگا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 11 =