امریکہ کے پاس ایران مخالف دباو سے دستبرداری کے سوا کوئی چارہ نہیں: صدر روحانی

تہران، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ امریکہ کے پاس جلد بدیر اور آئندہ صدارتی انتخابات سے پہلے یا اس کے بعد ایران کے خلاف کم سے کم دباؤ کی پالیسی سے دستبرداری کے سوا کوئی چارہ نہیں ہے.

ان خیالات کا اظہار "حسن روحانی" نے پیر کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے بھارتی وزیر خارجہ "سابرامانیام جایشانکار" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا.
انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ اور دوستانہ تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں موجودہ تجارتی اور اقتصادی تعلقات بڑھانے کے لئے بھرپور کوشش کرنا ہوگا.
صدر روحانی نے چابہار بندرگاہ میں دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعاون پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ چابہار زاہدان ریلوے لائن کی تکمیل اس بندرگاہ کی پوزیشن کی ترقی کے علاوہ خطے کی تجارتی شراکت میں تبدیلی اور سامان کی چھوٹی اور سستی منتقلی کا باعث بنے گی اور خوش قسمتی سے آج اس کے لئے بھرپور کوشش کی جاتی ہے.
بھارتی وزیر خارجہ نے کہا کہ خوش قسمتی سے آج چابہار علاقے میں دونوں ممالک کے درمیان اچھے باہمی تعلقات قائم ہیں اور مشترکہ منصوبوں پر عملدرآمد کے لئے کوشش کرنے کی ضرورت ہے.
جایشنکار نے کہا کہ ہمیں یقین رکھتا ہے کہ موجودہ سخت صورتحال کا خاتمہ ہوگا اور اسلامی جمہوریہ ایران اور بھارت کے درمیان تعلقات پائیدار اور مستحکم جاری رکھ جائیں گے.
یاد رہے کہ اعلی ایرانی قومی سلامتی کے سیکریٹری ایڈمیرل علی شمخانی نے بھارتی وزیر خارجہ کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران پابندیاں اور دہشتگردی کو خودمختار ممالک کے خلاف امریکی حکمت عملی قرار دیتے ہوئے کہا کہ باہمی یکجہتی کے ساتھ ان دو غیر انسانی خطرات کو ختم کر کے ، علاقائی ممالک کی دیسی صلاحیتوں پر انحصار کے ساتھ ترقی کے نئے افق کو کھینچا اور حاصل کیا جاسکتا ہے۔
بھارتی وزیر خارجہ نے گزشتہ روز اپنے ایرانی ہم منصب محمد جواد ظریف کے ساتھ ملاقات کی.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 1 =