ایران کیساتھ منصفانہ اور غیرجانبدرانہ طور پر پیش آئیں گے: سربراہ عالمی جوہری ادارہ

تہران، ارنا - بین الاقوامی جوہری توانائی ادارے کے ڈائریکٹر جنرل نے کہا ہے کہ یہ ادارہ ایران کی جوہری سرگرمیوں پر نگرانی کے لئے فیصلہ کن، منصفانہ اور غیرجانبدرانہ رویہ اپنائے گا.

یہ بات "رافائل گروسی" جنہوں نے روان مہینے کے آغاز سے بطور آئی اے ای اے کے نئے سربراہ کے عہدہ سنھبالا، نے آسٹریا کے اسٹنڈرد اخبار کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے ایران کی جوہری سرگرمیوں کی نگرانی سے متعلق منصفانہ اور سخت رویہ اپنانے سے متعلق اپنے حالیہ بیانات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ  انصاف پر مبنی عمل کرنے سے مراد ہرگز سیاسی نہیں بلکہ ہمیں اپنے فرائض کو غیر جانبدارنہ طور پر سرانجام د ینی چاہیے۔

گروسی نے آئی اے ای اے کی رپورٹوں کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ جوہری توانائی ادارے کو اکیسویں صدی میں اپنے کاموں کو انتہائی واضح، جدید اور فعال انداز میں آگے بڑھانا ہوگا۔

 عالمی جوہری ادارے کے سربراہ نے ایران کیساتھ تعاون سے متعلق کہا کہ اس حوالے سے ایران اور آئی اے ای اے کے درمیان مذاکرات کا سلسلہ جاری ہے کیونکہ معائنہ کے عمل کو مذاکرات کیساتھ جاری رہنا ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عالمی جوہری ادارے  کو ابھی ایران کیجانب سے تمام ضروری معلومات کی فراہمی نہیں ہوگئی ہے لیکن ایران کیساتھ مذاکراتی عمل جاری ہے۔

رافائل گروسی نے کہا کہ جوہری ادارے کا فرض ایران جوہری معاہدے کا تحفظ ہے نہ کہ اس کی تباہی اور اگر اس سلسلے میں سیاسی میدان میں داخل ہوجائے تو اس کا تباہ کن اثر ہوگا۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ گروسی کو آئی اے ای اے کے سابق سربراہ یوکی یا امانو کی جگہ تعینات کیا گیا ہے جو 2009ء سے خدمات سر انجام دے رہے تھے اور اس سال جولائی میں 72 سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 4 =