ایران میں اقلیتی اراکین پارلیمنٹ کی ملک کیخلاف نام نہاد انسانی حقوق قرارداد کی مذمت

تہران، ارنا - ایرانی پارلیمنٹ میں مذہبی اقلیتوں کے نمائندوں نے اپنے ایک بیان میں ایران کے خلاف انسانی حقوق سے متعلق قرارداد کی مذمت کی.

ایرانی پارلیمنٹ میں 'یوناتن بت‌کلیا، سیامک مره‌صدق، اسفندیار اختیاری کسنویه یزد، کارن خانلری و ژرژیک آبرامیان' جو آشوری ، یہودی ، زرتشتی اور عیسائی برادری کے نمائندے ہیں، نے آج بروز اتوار اپنے جاری کردہ ایک بیان میں ایران کے خلاف انسانی حقوق سے متعلق قرارداد کی مذمت کرتے ہوئے حکومت سے بین الاقوامی سطح میں ایران دشمن ممالک کے ایران مخالف عزائم کو غیر موثربنانے کا مطالبہ کیا.
قابل ذکر ہے کہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 74 ویں اجلاس میں متعدد قراردادیں پیش کی گئی جس میں کینیڈا کی جانب سے تجویز کردہ انسانی حقوق کی ایران مخالف قرارداد تھی اور اس اجلاس میں ہونے والی رائے شماری میں اس قرارداد کی حمایت میں 81 اور مخالفت میں 30 ووٹ ڈالے گئے جبکہ 12 نمائندے نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا اور70 اراکین نے اپنی رائے کا اظہار نہیں کیا.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =