ایرانی سابق پہلوان کو 2012 کے اولمپک مقابلوں کے طلائی تمغے کو دیا گیا

تہران، ارنا - عالمی کشتی یونین نے لندن میں منعقدہ 2012 کے اولمپک مقابلوں میں یوکرینی کھلاڑی کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد اس کھیلاڑی کا طلائی تمغہ ایرانی کھیلاڑی 'نواب نصیرشلال' کو دیا جائے گا.

بین الاقوامی کشتی یونین کی ڈوپنگ کی تصدیق کے بعد ایرانی سابق کھیلاڑی نے لندن میں منعقدہ 2012 کے اولمپک مقابلوں کے سونے کے تمغے کو اپنے نام کرلیا.
نصیرشلال جنہوں نے 2012 کے مقابلوں میں ایک چاندی کا تمغہ حاصل کر لیا تھا اب سات سال گزرنے کے بعد اولمپک مقابلوں کا طلائی تمغہ انہیں دیا گیا ہے.
2012 کے اولمپک کشتی مقابلوں میں 4 ایرانی پہلوانوں 'بہداد سلیمی، امید نوری، قاسم رضایی اور حمید سوریان' نے طلائی تمغہ حاصل کیا تھا لیکن 'سعید محمدپور، کمیل قاسمی اور نواب نصیرشلال نے کچھ سال بعد دوسرے کھیلاڑیوں کی ڈوپنگ کی تصدیق کی وجہ سے طلائی تمغہ حاصل کرلیا.
نواب نصیرشلال کے اس طلائی تمغے کےساتھ ایران نے 2012 کے مقابلوں میں 7 طلائی تمغے حاصل کر لیے اور 12 ویں پوزیشن پر آگیا.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 3 =