ہمیں کسی تیسرے ملک کو ایران اور جاپان کے تعلقات خراب کرنے کی اجازت نہیں دینی ہوگی: ایرانی صدر

تہران، ارنا – ایرانی صدر نے کہا ہے کہ ہمیں کسی تیسرے ملک کو ایران اور جاپان کے مابین تعلقات کو خراب کرنے کی اجازت نہیں دینی ہوگی.

یہ بات حسن روحانی نے آج بروز ہفتہ ٹوکیو میں سیاسی، اقتصادی اور ثقافتی شعبوں میں جاپان کے متعدد سینئر ایگزیکٹوز کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی.

روحانی نے کہا کہ بڑے اقتصادی منصوبوں میں شرکت اور سرمایہ کاری کے لئے ایران کے دروازے جاپانی حکومت اور کمپنیوں کے لئے کھلے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور جاپان کو دو پرانے دوستوں کی حیثیت سے کسی تیسرے ملک کو دونوں ممالک کے تعلقات میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے.

صدر روحانی نے کہا ہم بنیادی ڈھانچے، ماحولیات، خوراک اور ادویات کے امور میں بھی مکمل طور پر تعاون کر سکتے ہیں۔

روحانی نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ امریکی غیر قانونی پابندیاں طویل عرصے تک جاری نہیں رہ سکتیں اور امریکہ ایک دن مجبور ہوگا کہ اس نقصان دہ اور فضول راستے کو چھوڑ دے.

ایرانی صدر نے مزید کہا کہ امید ہے کہ جاپانی حکومت دونوں ممالک کے تعلقات کی بہتری کے لیے جاپانی بینکوں میں منجمد ہونے والی ایرانی کرنسیوں کی بحالی کی کوشش کرے تا کہ ہم اس نازک حالات میں اس پیسوں کا استعمال کر سکیں.

روحانی نے مزید کہا کہ یہ کرنسی امریکی پابندی سے پہلے ہمارے تیل کی فروخت سے متعلق ہیں اور یہ ہمارا جائز حق ہے.
انہوں نے کہا کہ جاپانی کمپنیوں چابہار بندرگاہ جیسے اہم منصوبوں میں مزید سرمایہ کاری کر سکتی ہیں.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 14 =