امریکی پابندیوں کا نتیجہ کسی کے مفاد میں نہیں ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا - ایرانی صدر مملکت نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے سے امریکہ کی غیر قانونی علیحدگی، اس بین الاقوامی معاہدے  اور امن و سلامتی کے لیے ایک دھچکا تھی اور بلاشبہ پابندیوں کا نتیجہ کسی کے مفاد میں نہیں ہوگا۔

یہ بات ڈاکٹر حسن روحانی جو جاپانی وزیر اعظم کی سرکاری دعوت پر اس ملک کے دورے پر ہے، نے آج بروز جمعہ 'شنزو آبے' کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے ہرمز امن منصوبے سے چین کی حمایت پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے ہمیشہ خطے کی سیکورٹی کے لیے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کیا ہے اور ہمارے خیال میں غیر علاقائی ممالک خلیج فارس کے سلامتی کو تباہ کر دیا ہے۔

ایرانی صدر نے ایران اور جاپان کے درمیان دوستانہ تعلقات کو مضبوط بنانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک توانائی، سائنس اور نئی ٹیکنالوجی، طبی، سیاحتی، کھیلوں، کسٹم، صنعتی، معاشی اور تجارتی تعلقات سمیت مختلف شعبوں میں  باہمی تعاون کو فروغ دے سکتے ہیں۔

روحانی نے کہا کہ ایران نے جوہری معاہدے کے تحفظ کے لیے اپنی تمام صلاحیتوں سے فائدہ اٹھایا ہے اور اٹھائے گا اور ہم دوسرے فریقین کی جانب سے اپنے جوہری وعدوں پر عمل کرنے کے خواہاں ہیں۔

ایرانی صدر نے کہا کہ امید ہے کہ تمام ممالک بشمول جاپان جوہری معاہدے کے بچانے کے لیے اپنی تمام کوششوں کو بروئے کار لائیں۔

روحانی  نے ایران اور دوسرے ممالک کے درمیان تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم تیل کی برآمدات، توانائی سمیت اقتصادی تبادلوں کے فروغ کے لیے کسی بھی ترقیاتی منصوبے کا خیر مقدم کریں گے۔

انہوں نے ایران کے ساتھ باہمی تعاون کی توسیع کے لیے اپنا ملک کی دلچسبی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم مختلف شعبوں خاص طور پر قونصلر، تکنیکی اور طبی انتظام، بحران کے انتظام اور زلزلے سے مقابلے کے لیے دوطرفہ تعاون بڑھانے کے لیے  پر عزم ہیں۔

شینزو آبے نے کہا کہ ہم باہمی تعلقاتکو مزید فروغ دینے کے لئے کو سیاحتی شعبے میں طے پانے والے معاہدے کے نفاذ کے خواہاں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق، ایرانی صدر جو گزشتہ روز کوالالامپور سمٹ کی شرکت کے لیے ملائیشیا کے دورے پر تھے، آج جاپانی وزیر اعظم کے ساتھ ملاقات کے لیے ٹوکیو پہنچ گئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 9 =