مسلمہ امہ کی یکجہتی کے بغیر عالم اسلام کے مسائل کا حل ممکن نہیں: ایرانی صدر

تہران، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ مسلمانوں کے درمیان یکجہتی اور تعاون کے بغیر عالم اسلام کو درپیش مشکلات کا حل ممکن نہیں ہے.

صدر روحانی نے کوالالمپور سمٹ کے موقع پر ملائیشیائی بادشاہ کے ساتھ ایک ملاقات میں فلسطین کو عالم اسلام کے دل میں گہرا زخم قرار دیتے ہوئے اس بات کا مطالبہ کیا ہے کہ کوالالمپور سمٹ میں فلسطین پر خصوصی توجہ دینی ہوگی.

 ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" جو 2019 کوالالمپور سمٹ میں شرکت کرنے کیلئے ملائشیا کے دورے پر ہیں، نے آج بروز بدھ کو "سلطان عبداللہ" کیساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کوالالمپور سمٹ کے انعقاد کیلئے ملائیشیا کے وزیر اعظم کے بروقت اقدام اور ان کی کوششوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مسئلہ فلسطین، مسلمانوں کے اندرونی معاملات میں دنیا کی بڑی طاقتوں کی مداخلت اور معاشی اور سائنسی ترقی کو دنیائے اسلام کے سب سے اہم موضوعات قرار دے دیا۔

صدر روحانی نے اس بات پر زور دیا کہ دنیائے اسلام کے مسائل کا اسلامی ممالک کے درمیان بغیر یکجہتی کے حل نہیں ہوگا۔

انہوں نے 70 سالوں کے دوران فلسطینی عوام کی ابتر صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ فلسطین دنیائے اسلام کا گہرا زخم ہے جس پر کوالالمپور سمٹ میں سنجیدگی سے توجہ دینی چاہیے۔

 اس موثع پر ملائشیا کے بادشاہ نے بھی کوالالمپور سمٹ میں صدر روحانی کی شرکت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ان کی موجودگی، اس اجلاس کی سطح کو بڑھا دے گی۔

 اس ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کا جائزہ لینے سمیت اقتصادی اور ثقافتی شعبوں میں باہمی تعلقات کے فروغ پر زور د یا گیا۔

سلطان عبداللہ نے ملائیشیا میں ایرانی طلبا کی موجودگی کو دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کی مضبوطی کا باعث قرار دیتے ہوئے کہا کہ ملائشیا کی حکومت ان کو مناسب رہائش اور تعلیم کیلئے سہولیات کی فراہمی پر کسی کوشش سے دریغ نہیں کرے گی۔

 یہ بات قابل ذکر کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت نے ملائیشیا کے وزیراعظم کی دعوت پر 2019 کوالالمپور سمٹ میں شرکت کیلئے ملائشیا کا دورہ کیا ہے۔

وہ اس دورے کے اختتام کے بعد جاپان کا دورہ کریں گے جہاں وہ جاپانی وزیر اعظم " ابے شنزو کیساتھ ملاقات کریں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 0 =