15 دسمبر، 2019 4:42 PM
Journalist ID: 2393
News Code: 83595471
0 Persons
ایرانی جنوبی شہر اہواز، پلوں کا شہر

اہواز، ارنا – اہواز ایران کے جنوبی صوبہ خوزستان کے صوبائی دارالحکومت ہے جو اپنے متعدد سیاحتی اور دلکش مقامات کیساتھ ہرآنکھ کی توجہ کو اپنی طرف راغب کر رہا ہے۔

یہ شہر اپنے میہمان نواز لوگ اور گرم آب و ہوا کے ساتھ سردیوں اور خزان کے موسموں میں سیاحوں کی ایک اہم منزل ہوتا ہے جس کا تعلق ایلامیان کے دور حکومت سے ہے۔

ہم طیارے، ٹرین اور ذاتی کار کے ساتھ اس شہر کا سفر کر سکتے ہیں۔

تہران سے اہواز کا فاصلہ 800 کلومیٹر ہے جو اہواز پہنچنے سے پہلے قم، اراک، بروجرد، خرم آباد، اندیمشک اور شوش کے خوبصورت شہروں کا بھی دورہ کر سکتے ہیں۔

اس شہر کے بہت سیاحتی مقامات ہیں جو درج ذیل ہیں:

٭٭معلق پل اہواز

یہ پل جس کا دوسرا نام 'پل سفید' ہے 80 سال پرانا ہے جس شہر کی خوبصورت جگہوں میں سے ایک ہے۔ یہ پل دریائے کارون کے مشرق اور مغرب کو ایک دوسرے سے منسلک کرتا ہے۔ دریائے کارون ایران کے سب سے طویل ترین دریا ہے۔

٭٭ سیاہ یا پیروزی کا پل

عالمی دوسری جنگ کے زمانے روسی فورسز کے خوراک اور گولہ باروڈ کی منتقلی کے لیےاس پل کا استعمال ہو جاتا تھا جو متفقین کی فتح کی وجہ سے یہ پل 'پیروزی پل' کے نام سے بھی مشہورہے۔ یہ پل جنوبی بندرگاہ 'امام خمینی' کو خرمشہر- تہران ریلوے لائن سے منسلک کرتا ہے۔

٭٭ طبیعت کیانپارس کا پل

یہ لالہ پارک اور ساحلی پارک کے درمیان پل ہے جس شہر کے قابل دید مقامات میں سے ایک ہوتا ہے۔

اس شہر میں مشرق وسطی کے سب سے طویل ترین آبشار موجود ہے۔

٭٭عبد الحمید بازار

یہ بازار اس شہر کے ایک اور دلکش مقام ہے جو اہواز کے سب سے اہم بازاروں میں سے ایک ہے ۔ شیخ خز عل نامی کاروانسائے بھی اسی بازار میں ہے۔

٭٭بازار کاوہ

یہ بازار پہلوی حکومت سے متعلق ہے۔ اس بازار کی اہم مصنوعات کھجور کا رس، تازہ مچھلی اور کیکڑے ،کھجور، ہیں۔

٭٭معین التجار عمارت

یہ عمارت ناصر الدین شاہ قاجار کے زمانے میں بنائی گئی ہے جو اب سیاحوں کی ایک اہم منزل ہے۔

٭٭سورت مسروپ نامی چرچ

یہ چرچ اہواز کے دلکش سیاحتی مقامات میں ہے۔ یہ چرچ  1347 ہجری شمسی میں 'ترداد داویدیان' نامی شخصی کے ذریعے تعمیر کی گئی۔

٭٭علی ابن مہزیار کا مزار

اس عمارت کا شمار اس شہر  کے سب سے پرانی اور اہم عمارتوں میں ہوتی ہے۔ علی ابن مہزیار امام رضا (ع) کا اصحاب اور شیعہ اسکالرز اور فقہاء میں سے تھے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =