"بشیر امن اور دوستی" درخت ایرانی امن نظریے کو دنیا کو متعارف کرواتا ہے

تبریز، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ شہر تبریز میں "بشیر امن اور دوستی" ہنری درخت ہمارے ملک کے امن نظریے کو دنیا کو متعارف کرواتا ہے.

یہ بات "سید عباس موسوی" نے گزشتہ روز ایرانی صوبے آذربائیجان شرقی کے شہر تبریز کے دورے پر صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے اس درخت کی عالمگیریت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس درخت کا پیغام ، جیسا کہ اس کے عنوان سے ظاہر ہوتا ہے ، اقوام اور ممالک کے درمیان امن اور دوستی کو فروغ دینا ہے۔
موسوی نے کہا کہ ہم اس قیمتی کام جس کی تعمیر آٹھ سال لگے، کو بین الاقوامی میدان میں لانے کے لئے کوشش کریں گے اس کے ذریعے دنیا کو ایرانی امن اور دوستی کا پیغام پہنچایا جاسکتا ہے۔
ایرانی شہر تبریز سے تعلق رکھنے والے فنکار "علی قنبری" نے آٹھ سال کے دوران "بشیر امن اور دوستی" درخت کی تعمیر کی جس کی اونچائی 4 میٹر ہے.
یہ درخت 40 شاخوں پر شامل ہے جو یہ تعداد تمام مذاہب میں مقدس سمجھی جاتی ہے اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اس عمر میں نبی بن گئے اور ان شاخوں کے اوپر ، چار فرشتے ، جو خدا کی پاکیزگی اور سفیروں کی علامت ہیں ، زمین پر انسان دوستی اور امن کے لئے دعا کرتے ہیں۔
اس درخت کے آس پاس پانچ آسمانی کتابیں ہیں جو انسانوں کو امن اور دوستی کی دعوت دیتی ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 0 =