یورپ کیجانب سے ٹرگر میکنزم پر عمل کرنے کا کوئی پلان نہیں: عراقچی

تہران، ارنا - نائب ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے یورپی فریقین کے ساتھ حالیہ نشست میں ٹرگر میکنزم پر کوئی بات چیت نہیں ہوئی لہذا اس مسئلے کو اٹھائے جانے کا اس وقت کوئی منصوبہ نہیں ہے.

ان خیالات کا اظہار نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور سید "عباس عراقچی" نے پارلیمانی کمیٹی برائے سول امور کے اجلاس کے موقع پر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے جوہری معاہدے کے وعدوں میں کمی لانے کے پانچویں مرحلے کے نفاذ کے حوالے سے ایران کے فیصلے سے متعلق کہا کہ موجودہ صورتحال میں جوہری معاہدے کے وعدوں میں کمی لانے کے پانچویں مرحلے پر نفاذ تک تقریبا ایک مہینے باقی ہے اور اسی لیے اس حوالے سے مختلف تجاویز پیش کی گئی ہیں۔

عراقچی نے اس بات پر زور دیا کہ الٹی میٹم کے آخری دنوں میں جوہری وعدوں میں کمی لانے کی مقدار سے متعلق فیصلہ کیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور 4+1 گروپ کے درمیان حالیہ اجلاس میں اس بات پر زور دیا گیا کہ اگر ایران جوہری معاہدے کے ثمرات سے مستفید نہ ہوجائے تو وہ جوہری وعدوں میں کمی سے متعلق نئے اقدمات اٹھائے گا۔

اعلی ایرانی سفارتکار نے ایران کیجانب سے جوہری وعدوں میں کمی لانے کی وجہ سے یورپی فریقین کیجانب سے ٹرگر میکنزم کے نفاذ کے حوالے سے کہا کہ کہ ایران اور گروپ 4+1 کے درمیان حالیہ اجلاس میں یورپی فریین کیجانب سے ٹرگر میکنزم کے نفاذ کا بالکل جائزہ نہیں لیا گیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 0 =