عمان کیساتھ تعاون بڑھانے پر کوئی حدد مقرر نہیں: نائب ایرانی صدر

تہران، ارنا - سنیئر نائب ایرانی صدر نے ایران اور سلطنت عمان کے درمیان قریبی اور مستحکم روابط کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران عمان کیساتھ تعاون بڑھانے پر کوئی حدد مقرر نہیں ہے.

یہ بات اسحاق جہانگیری نے آج بروز اتوار ایران کے دورے پر آئے ہوئےعمانی وزیر صنعت 'علی بن مسعود السنیدی' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے کہا کہ ایران، عمان کے ساتھ باہمی تعلقات کے فروغ پر کوئی پابندی نہیں ہے جس کے علاوہ دونوں ممالک کے مابین باہمی تعاون کی سطح کو تیزی سے بڑھانے کا خواہاں ہے۔
انہوں نے مزید کہا ایران اور عمان کے درمیان سیاسی تعلقات اپنی اعلی ترین سطح پر ہیں.
جہانگیری نے کہا کہ تہران اور مسقط کے درمیان تعلقات کی توسیع، علاقائی ممالک اور جہان اسلام کے لیے فائدہ مند ہے اور ان تعلقات سے کوئی ملک کو نقصان نہیں پہنچائے گا.
انہوں نے ایران اور عمان کے درمیان دوستانہ تعلقات کو دوسرے علاقائی ممالک کے لیے ایک مثالی ماڈل قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور عمان جیسے اہم خطی ممالک اپنے باہمی تعلقات کے فروغ کے ساتھ دنیائے اسلام کے آج مسائل کے مسائل کے حل میں تعمیری کردار ادا کرسکتے ہیں۔
انہوں نے عمان کے ساتھ دوطرفہ اور کثیرالجہتی تعلقات کی توسیع کے لیے اسلامی جمہوریہ ایران کی دلچسبی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ پچھلے سال میں دونوں ممالک کے تجارتی حجم(1.3 ارب ڈالر تک پہنچنے) میں اضافے سے دونوں ممالک کے درمیان معاشی تعلقات میں نمایاں اضافہ ہوا ہے لیکن ابھی بھی ہم مطلوبہ نقطہ نظر سے بہت دور ہیں۔
ایرانی عہدیدار نے دونوں ممالک کے تجارتی تبادلوں کے فروغ کے لیے ایران اور عمان کے مشترکہ کمیشن کا تعمیری کردار کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس کمیشن کو باہمی تعلقات کی توسیع کے طریقوں اور حائل رکاوٹوں کو شناخت کر کے نجی شعبے کے روابط کی توسیع کے ساتھ باہمی تجارتی تبادلوں کے حجم کو فروغ دینا چاہیے.
انہوں نے عمانی شہریوں کے لیے ایرانی ویزے کی منسوخی اور ایرانی شہریوں کو ویزے جاری کرنے کی سہولیات فراہم کرنے اور دونوں ممالک کے درمیان براہ راست پروازوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات اور ٹرانزٹ اور جہاز رانی کے شعبوں میں دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعاون کی توسیع دونوں ممالک کے مابین تجارت کے حجم کو بڑھانے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔
اس موقع عمانی وزیر صنعت نے کہا کہ خوش قسمتی سے، اس سال ہم دونوں ممالک کے تاجروں کے مابین براہ راست رابطہ کا مشاہدہ کریں گے جو یہ ایران اور عمان کے درمیان تجارتی تبادلوں کی توسیع میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 11 =