امریکہ کے غصے کی اصل وجہ ایران کی سائنسی پیشرفت ہے: ایرانی پروفیسر

تہران، ارنا – امریکی جیل سے آزاد ہونے والے ایرانی سائنسدان 'مسعود سلیمانی' نے کہا ہے کہ امریکہ کے غصے کی اصل وجہ ایران کی سائنسی پیشرفت ہے.

یہ بات مسعود سلیمانی جو گزشتہ روز امریکی جیل سے آزاد ہوگئے، نے وطن کی واپسی کے بعد صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

مسعود سلیمانی نے کہا کہ جب میں امریکہ میں سائنسی موضوعات کے بارے میں بات کرتا تھا، امریکہ کی پولیس، جیلرز اور جج ناراض ہوتے تھے.

انہوں نے اپنی رہائی کیلیے سپریم لیڈر کے آفس، حکومت، عدلیہ اور خاص طور پر ڈاکٹر ظریف کی کاوشوں اور کوششوں پر شکریہ ادا کیا.

انہوں نے کہا کہ "جب میں جیل تھے امریکی حکام نے دوسرے قیدیوں کو بتایا کہ وہ ایک دہشتگرد ہے لیکن قیدی ان کی اس بات کو قبول نہیں کرتے تھے".

انہوں نے کہا کہ امریکہ کا مقصد ایرانی عوام ہے اور وہ ایران  کا دشمن نمبر ون ہے.

ڈاکٹر 'مسعود سلیمانی' امریکی جیلوں میں 15 مہینے تک غیرقانونی گرفتاری کے بعد گزشتہ رات ایرانی وزیر خارجہ کے ہمراہ ایک خصوصی پرواز میں تہران کے مہرآباد ایئرپورٹ پر پہنچ گئے.

ڈاکٹر سلیمانی کی رہائی کے لیے ایرانی حکومت نے ایران میں گرفتار امریکی جاسوس "ژائو ونگ" کو آزاد کر کے سوئٹزرلینڈ کے حکام کے حوالہ کردیا گیا.

یاد رہے کہ 22اکتوبر 2018 کو مسعود سلیمانی ایک پروفیسر اور سٹیم سیل کے محقق کی حیثیت سے امریکہ روانہ ہوگیا مگر ویزا ملنے کے باوجود شکاگو کے ہوائی اڈے پر نامعلوم وجوہات کی بناء پر گرفتار اس کے بعد علاقے جورجیا میں آٹلانٹا "دیتون" جیل میں منتقل کردیا گیا.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 12 =