6 دسمبر، 2019 1:06 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83582973
0 Persons
تیل سے متعلق اپنے حق سے پیچھے نہیں ہٹیں گے: ایران

ویانا، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے مندوب نے کہا ہے کہ ایران پابندیوں کے خاتمے کے دور میں تیل کی پیداوار اور برآمدات سے متعلق اپنے حق سے پیچھے نہیں ہٹے گا.

ان خیالات کا اظہار یہ بات ویانا میں قائم عالمی اداروں میں تعینات ایران کے مستقل مندوب "کاظم غریب آبادی" نے ویانا میں منعقدہ تیل برآمد کرنے والے ممالک کی عالمی تنظیم کے 177 ویں اجلاس کے موقع پر صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ تیل کی پیدوار میں کمی کا فیصلہ ان ممالک پر اطلاق ہونا ہوگا جنہوں نے موجودہ صورتحال میں اپنی تیل کی پیداوار میں اضافہ کردیا ہے۔

واضح رہے کہ اوپک تنظیم کے رکن اور غیر رکن ممالک نے اس پہلے مارس 2020 تک تیل کی روزانہ پیداوار کو 10 لاکھ 200 ہزار بیرل یعنی عالمی تقاضے کے 2۔1 فیصد کے حصے میں  کمی لانے سے اتفاق کیا تھا۔

اس وقت یہ ممالک 5 اور 6 دسمبر کو ویانا میں اوپیک کے 177 اجلاس میں شریک ہوں گے جہاں وہ خام تیل کی پیداوار میں مزید کمی لانے یا کہ کمی لانے کے سلسلے کو روکنے پر فیصلہ کریں گے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ویانا کے دورے پر آئے ہوئے ایرانی وزیر تیل "بیژن نامدار زنگنہ" نے  گزشتہ روز کے دوران، ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے خام تیل کی پیداوار میں کمی سے متعلق ایرانی موقف کے بارے میں کہا ہے اگر تیل کی پیداوار میں کمی سے متعلق معاہدے کی تجدید ہوجائے یہ اوپک تنظیم کیلئے ایک بہت بڑی کامیابی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر اوپک اجلاس میں تیل کی پیداوار میں مزید کمی لانے کا فیصلہ کیا جائے وہ بھی ایک بڑی کامیابی ہے جس کی بھر پور حمایت کریں گے۔

انہوں نے ایران مخالف امریکی پابندیوں کی وجہ سے تیل کی برآمدات میں کمی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ ممالک جنہوں نے تیل مارکیٹ سے ایرانی تیل کی علیحدگی سے فائدہ اٹھا کر اپنی تیل کی پیداوار میں اضافہ کردیا ہے ان کو مستقبل میں اپنی تیل پیداوار میں کمی لانا ہوگا۔

زنگنہ نے مزید کہا کہ توقع نہیں کی جا سکتی کہ ایران کیخلاف عائد پابندیاں اٹھانے کے بعد ہم جلدی سے تیل کی پیدوار میں کمی لانے کے فیصلے پر عمل درآمد کریں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 5 =