تیل کی پیداوار میں کمی سے متعلق اجتماعی فیصلے کی حمایت کریں گے: ایران

ویانا، ارنا- اوپک ایگزیکٹو بورڈ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مندوب نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ان کا ملک، تیل کی پیدوار میں کمی سے متعلق اوپک رکن ممالک کے اجتماعی فیصلے کی حمایت کرتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار"حسین کاظم پور اردبیلی" نے تیل برآمد کنندہ ممالک کی عالمی تنظیم اوپک کے 177 ویں اجلاس کےموقع پر صحافیوں کیساتھ بات کرتے ہوئے کیا۔

ایرانی مندوب کے ان خیالات ایک ایسے وقت سامنے آئے ہیں جبکہ ویانا کےدورے پر آئے ہوئے ایرانی وزیر تیل "بیژن نامدار زنگنہ" نے ابھی کسی بھی ذرائع ابلاغ سے گفتگو نہیں کی ہے۔

انہوں نے جمعرات کے روز اوپک تنظیم کے سیکرٹری جنرل اور اوپک کانفرس کے صدر کیساتھ ملاقات کی۔

زنگنہ نے ملاقات کے موقع پر خام تیل کی پیدوار میں کمی سے متعلق صحافیوں کے سوال کے جواب میں کہا ہے وہ اس حوالے سے اپنے دیگر ہم منصبوں کیساتھ مذاکرات کے بعد فیصلہ کریں گے۔

واضح رہے کہ اوپک تنظیم کے رکن اور غیر رکن ممالک نے اس پہلے  مارس 2020 تک تیل کی روزانہ پیداوار کو 10 لاکھ 200 ہزار بیرل یعنی عالمی تقاضے کے 2۔1 فیصد کے حصے میں  کمی لانے سے اتفاق کیا تھا۔

اس وقت یہ ممالک 5 اور 6 دسمبر کو ویانا میں اوپیک کے 177 اجلاس میں شریک ہوں گے جہاں وہ خام تیل کی پیداوار میں مزید کمی لانے یا کہ کمی لانے کے سلسلے کو روکنے پر فیصلہ کریں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 5 =