4 دسمبر، 2019 12:14 PM
Journalist ID: 2393
News Code: 83580439
0 Persons
ایران جاپانی فوجیوں کو مشرق وسطی بھیجنے کا مخالف ہے

بیجنگ، ارنا – نائب ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہم مشرق وسطیٰ کے پانیوں میں جہاز رانی کو محفوظ بنانے کیلیے جاپانی سیلف ڈیفنس فورسز بھیجنے کے منصوبے کے ساتھ مخالف ہیں.

یہ بات سید عباس عراقچی نے آج بروز بدھ دورہ ٹوکیو کے موقع پر جاپانی سرکاری ٹی وی چینل 'NHK' کو انٹرویو دیتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ ایران،اس حوالے سے جاپان کے حتمی فیصلے کا منتظر ہے، لیکن ہمارا یقین ہے کہ خطے میں غیر ملکی فوج کی موجودگی استحکام ، سلامتی اور امن کو فروغ نہیں دے گی۔

اس سے پہلے عراقچی نے جاپانی وزیر اعظم 'آبے شینزو 'کے ساتھ ملاقات میں جوہری معاہدے پر ایران کے موقف پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ایران کیخلاف عائد پابندیوں کو اٹھانے اور اس معاہدے کے ثمرات سے مستفید ہونے کی صورت میں ہم جوہری معاہدے پر واپس آئیں گے۔

اس موقع پر جاپان کے وزیر خارجہ نے بھی مشرق وسطی کی حالیہ صورتحال پر اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سفارتی کوششوں کے ذریعے خطی کشیدگی میں کمی لانا ہوگا۔

انہوں نے جاپانی ٹی وی کے ساتھ انٹرویو کے تسلسل میں مزید کہا کہ امریکی پالیسیاں مشرق وسطی میں کشیدگی بڑھانے کی جڑ ہیں.

انہوں نے ایران پر زیادہ سے زیادہ دباو ڈالنے اور جوہری معاہدے سے علیحدگی کے لیے امریکہ کی شدید تنقید کی.

قابل ذکرہے کہ ایران جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کا اجلاس ماہرین کی سطح پر 6 دسمبر کو ویانا میں منعقد ہوگا اسی تناظر میں اعلی ایرانی سفارتکار نے جاپانی اور چینی حکام کیساتھ مذاکرات کیلئے بیجنگ اور ٹوکیو کا دورہ کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 3 =