نیدرلینڈز، ایران میں پانی، خوراک اور قابل تجدیدتوانائی کے شعبوں میں تعاون کا خواہاں

کیش، ارنا - ایران میں تعینات نیدرلینڈ کے سفیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک ایرانی جزیرے کیش کی انتظامی اتھارٹی کے ساتھ پانی، خوراک اور قابل تجدید توانائی کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کا خواہاں ہے.

یہ بات "ژاک لویی ورنر" نے منگل کے روز ایرانی فری زون علاقے جزیرے کیش کے منیجنگ ڈائریکٹر "غلامحسین مظفری" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے ایران کے ساتھ تجارتی لین دین کی فراہمی کے لئے یورپ کے مالیاتی نظام اینسٹکس میں فن لینڈ ، بیلجیم ، ڈنمارک ، نیدرلینڈز ، ناروے اور سویڈن کی شمولیت کو دو طرفہ تعلقات بڑھانے کے لئے ایک اہم اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم پہلے مرحلے میں ایران کے ساتھ پانی، زراعت اور انسان دوستانہ اقدامات کے شعبوں میں تعاون چاہتے ہیں تا کہ دوسرے اقتصادی سرگرمیوں کے مواقع فراہم ہوں گے.
ورنر نے کہا کہ نیدرلینڈز کی حکومت جزیرے کیش میں پانی، خوراک اور قابل تجدیدتوانائی کے شعبوں میں سرگرمیوں کے آغاز کے لئے اس فری زون علاقے کی صلاحیتیں، سہولیات اور ہوائی نقل و حمل کا جائزہ لے رہی ہے.
انہوں نے کہا کہ ہم اس شعبوں کے علاوہ تعلیمی، گرین ہاؤس سسٹم کے ذریعے خوراک کی پیداواری کے شعبوں میں باہمی تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں.
مظفری نے کہا کہ سالانہ 18 لاکھ سیاح اس جزیرے کی سیاحت کر رہے ہیں لہذا ہم نیدرلینڈز کی میزبانی کے لئے تیار ہیں.
انہوں نے کہا کہ ہم نیدرلینڈز کے ساتھ کثیرالجہتی تعلقات بڑھانے کے لئے پر عزم ہیں.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 6 =