ایران کیخلاف عائد پابندیاں اٹھانے کی صورت میں جوہری معاہدے پر واپس آئیں گے: عراقچی

بیجنگ، ارنا-  نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے جاپانی وزیر خارجہ کیساتھ ایک ملاقات میں کہا ہے کہ ایران کیخلاف عائد پابندیوں کو اٹھانے اور اس معاہدے کے ثمرات سے مستفید ہونے کی صورت میں ہم جوہری معاہدے پر واپس آئیں گے۔

جاپان کے دورے پر آئے ہوئے سید "عباس عراقچی" نے منگل کے روز "توشی میتسو موتگی" کیساتھ ملاقات میں مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، جوہری معاہدے سے علیحدہ نہیں ہونا چاہتا ہے لیکن ہم نے ایک سال کیلئے صبر کی اور یورپی ممالک نے اپنے کیے گئے وعدوں کے نفاذ کیلئے مناسب اقدام نہیں اٹھایا اسی لیے ایران نے اپنے جوہری وعدوں میں کمی لانے کا فیصلہ کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مشرق وسطی کی نازک صورتحال کے تناظر میں خطی کشیدگی میں کمی لانے کیلئے علاقائی ممالک کے درمیان تعاون ناگزیر ہے۔
اس موقع پر جاپان کے وزیر خارجہ نے بھی مشرق وسطی کی حالیہ صورتحال پر اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سفارتی کوششوں کے ذریعے خطی کشیدگی میں کمی لانا ہوگا۔

توشی میتسو موتگی نے ایران جوہری معاہدے کی حمایت کرتے ہوئے تمام فریقین کو صبر و تحمل کے مظاہرے کی دعوت دی۔

اس ملاقات میں دونوں فریقین نے باہمی دلچسبی امور سمیت علاقائی اور بین الاقوامی مسائل بشمول خلیج فارس اور مشرق وسطی کی حالیہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

واضح رہے ایران جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کا اجلاس ماہرین کی سطح پر 6 دسمبر کو ویانا میں منعقد ہوگا اسی تناظر میں اعلی ایرانی سفارتکار نے جاپانی اور چینی حکام کیساتھ مذاکرات کیلئے بیجنگ اور ٹوکیو کا دورہ کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 6 =