ایران اور پاکستان کا ٹرانسپورٹیشن شعبے میں تعاون بڑھانے پر اتفاق

زاہدان، ارنا - پاکستان سے ملحقہ ایران کے سرحدی صوبے سیستان و بلوچستان کے ایک سنئیر عہدیدار نے کہا ہے کہ دونوں ممالک نے حال ہی میں ٹرانسپورٹیشن شعبے میں باہمی تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے.

یہ بات ایرانی صوبے جنوب مشرقی سیستان و بلوچستان کے روڈ اینڈ ٹرانسپورٹیشن ادارہ کے سربراہ "ایوب کرد" نے پیر کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے مزید کہا کہ زاہدان میں پاک ایران مشترکہ سرحدی تجارتی کمیٹی کے ساتویں اجلاس کا انعقاد کیا گیا جو دو روز تک جاری رہا اور اس موقع پر دونوں ملکوں نے ٹرانسپورٹیشن سے متعلق مشترکہ سرگرمیوں کو مزید بڑھانے کا فیصلہ کیا.
انہوں نے کہا کہ صوبے سیستان و بلوچستان اپنی اعلی صلاحیتوں کے ساتھ علاقائی ممالک سمیت پاکستان کے لئے نقل و حمل اور ٹرانزٹ کے شعبوں میں اقتصادی مواقع فراہم کر رہا ہے.
کرد نے حالیہ دنوں میں منعقدہ پاک ایران سرحدی تجارتی نشست کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس اجلاس میں ایرانی ڈرائیوروں کے لئے 6 ماہ اور ایک سالہ ویزے کی فراہمی، کوئٹہ - تفتان روڈ کی تعمیر نو کو تیز کرنے، پاکستان کے تمام شہروں تک ایرانی سامان لے جانے والے ٹرکوں کو پہنچانے کی سہولیات پر تبادلہ خیال کیا گیا.
انہوں نے کہا کہ پاکستانی حکام دونوں ممالک کے درمیان مصنوعات کی زمینی نقل و حمل اور ٹرانزٹ کی سہولیات کی فراہمی کے لئے CMR کنونشن کے نفاذ کو جائزہ کریں گے.
انہوں نے پاکستانی زائرین کی خدمات کی فراہمی کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ زمینی سرحدوں سے زائرین کی آمد و رفت کی مبنی پر دونوں ممالک کے درمیان سیاحتی ٹرین کی نئی بحالی کی ضرورت ہے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 6 =