1 دسمبر، 2019 7:46 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83576631
0 Persons
یوریشیائی تاجروں کی ایران کیساتھ تجارت میں دلچسبی

تہران، ارنا- یوریشین اقتصادی یونین کی خاتون وزیر برائے تجارتی امور نے کہا ہے کہ ایران اور یوریشیا کے درمیان تعاون کے معاہدے پر دستخط سے پہلے بھی یوریشیائی تاجر، ایران سے تجارتی لین دین میں دلچسبی رکھتے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ 2018ء میں جب یوریشین یونین، اپنی مصنوعات کے ٹیرف میں کمی نہیں لائی تھی تب بھی ایران کی یوریشین یونین کو برآمدات میں 27 فیصد کا اضافہ ریکاڑد کیا گیا تھا۔

ان خیالات کا اظہار "ورونیکا نیکیشینا" نے آج بروز اتوار کو دارالحکومت تہران میں  یوریشیا سے تجارت سے متعلق منعقدہ کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ بہت ہی مختصر عرصے میں دونوں فریقین کے درمیان یہ معاہدہ طے پایا گیا جس سے باہمی تجارتی تعلقات کے حجم میں قال قدر اضافہ کرے گا۔

یوریشین اقتصادی یونین کی خاتون وزیر برائے تجارتی امور نے کہا کہ ہمیں مستقبل قریب میں اس معاہدے کو آزاد تجارتی معاہدے میں بدلنا ہوگا۔

نیکیشینا نے کہا کہ دونوں فریقین کے درمیان مذاکراتی عمل کا سلسلہ جاری ہے جو تعمیری بھی ہے اور ایران سے باقاعدہ ط۔ور پر مصنوعات کی برآمدات کے معاہدے پر بھی دستخط کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یوریشین یونین کے رکن ممالک کے کسٹم حکام، مصنوعات پر نیا ٹیرف لگائیں گے انہیں ایرانی سفارتخانے کا ایک خط موصول ہوا جس میں کہا گیا ہے کہ اس مسئلے کو ایران میں نفاذ کیا جارہا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور یوریشین یونین کے درمیان آزاد تجارت کے عبوری معاہدے کا 27 اکتوبر سے آغاز کیا گیا۔

اس معاہدے کے نفاذ کے ایک سال بعد، ایران اور یوریشن رکن ممالک کیساتھ آزادانہ تجارت کے انتظامات کیے جائیں گے۔

اس عبوری تجارتی معاہدے میں 862 کی مختلف قسم مصنوعات شامل ہیں جن میں سے 360 قسم کی مصنوعات کو ایران سے یوریشن یونین میں برآمدات کی جاتی ہے اور باقی 502 قسم کی مصنوعات کو یوریشین یونین سے ایران میں برآمد ہوجائے گی۔

فی الحال، روس، بیلاروس، قازقستان، آرمینیا اور کرغزستان یوریشین یونین کے پانچ ممبر ہیں لیکن اس یونین نے  40 سے زیادہ ممالک اور بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ کام کرنے کیلئے اپنی آمادگی کا اظہار کرلیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 2 =