ایران سے تعلقات ہماری خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے: صدر پاکستان

اسلام آباد، ارنا – پاکستان کے صدر نے علاقائی مواقف میں ایران کی حمایت کی تعریف کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ اس ملک کے ساتھ کثیرالجہتی تعلقات بڑھانا ہماری خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے.

یہ بات "عارف علوی" نے جمعہ کے روز پاکستان کے صدارتی محل میں تعینات ایرانی سفیر "مہدی ہنردوست" کے ساتھ الوداعی ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ پڑوسیوں سمیت اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کو فروغ دینا اسلام آباد کی خارجہ پالیسی کی اہم ترجیح ہے.
علوی نے اس بات پر زور دیا ہے کہ تہران اور اسلام آباد کے درمیان مذہبی، ثقافتی، دینی، عوام کے درمیان قریبی تعلقات اور مشترکہ مفادات کی مبنی پر اچھے تعلقات قائم ہیں.
انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان کثیرالجہتی تعلقات کو فروغ دینے کے لئے ایرانی سفیر مہدی ہنردوست کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے ان کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کیا.
پاکستانی صدر نے ایران اور پاکستان کے درمیان کثیرالجہتی تعلقات بڑھانے کے لئے دونوں ممالک کے سیاسی حکام کی کوششوں پر زور دیا اور کہا کہ موجودہ بڑھتے ہوئے تعلقات کو تحفظ اور جاری رکھ جائیں گے.
انہوں نے علاقائی مسائل اور مشکلات کے حل اور اس کے دفاع میں ایران کے حمایتی موقف کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارتی اور علاقائی باہمی تعاون کو توسیع دینے کی ضرورت ہے.
ایرانی سفیر نے کہا کہ علاقے میں امن اور استحکام کو جاری رکھنا اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے اہم مقاصد ہیں.
ہنردوست نے دونوں ممالک کے درمیان کثیرالجہتی تعلقات کو فروغ دینے پر زور دیا اور کہا کہ جنوبی ایشیا میں ایران اور پاکستان کے درمیان اسلامی دنیا کے دو اہم ممالک کے طور پر باہمی تعاون اور تعلقات بہت ہی اہم ہے.
انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان کے ساتھ علاقائی مسائل کے حل، قیام امن، اقتصادی، تجارتی اور تکنیکی تعلقات بڑھانے کے لئے باہمی تعاون پر تیار ہیں.
تفصیلات کے مطابق، ایرانی سفیر نے اپنے مشن کے اختتامی دنوں میں پاکستانی وزیر اعظم کے مشیر، نائب وزیر خارجہ اور آرمی چیف کے ساتھ دوطرفہ ملاقاتیں کی.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 5 =