20 نومبر، 2019 8:14 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83563382
0 Persons
30 ممالک کے طبی تاریخ کے سائنسدان ایران کا دورہ کریں گے

تہران، ارنا - ایران اور دنیائے اسلام کی طبی تاریخ کی دوسری کانفرنس کا 26 سے 29 نومبر تک تہران یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز میں انعقاد کیا جائے گا جس میں 30 ممالک کے سائنسدان حصہ لیں گے.

ان خیالات کا اظہار شہید بہشتی یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز کے پروفیسر "علی اکبر ولایتی" نے بدھ کے روز ایک پریس کانفرس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ بے شک جدید طب کو ایرانی روایتی حکیموں کے تجربات کی ضرورت ہے کیونکہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ماضی سے اب تک روایتی دوائی کے شعبے میں کافی ترقی حاصل کی ہے۔

*** ایران میں جڑی بوٹیوں کی 6 ہزار ادویات کی تیاری

ولایتی نے مزید کہا کہ ایران میں 1700سے 2 ہزار تک کی ایسی جڑی بوٹیوں موجود ہیں جن کے ذریعے 8 ہزار کی جڑی بوٹیوں کی ادویات کو تیار کیا جاسکتا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران اور دنیائے اسلام کی طبی تاریخ کا کانفرنس، ایرانی محکمہ صحت میں قائم روایتی دوائی کے دفتر، ورلڈ اکیڈمی آف فارمیسی ہسٹری (فرانس میں مقیم)، ایرانی وزرات سائنس، ایرانی میڈیکل ہسٹری اسٹڈیز کے دفتر، ورلڈ فارمیسی ہسٹری ایسوسی ایشن اور ایرانیولوجی فاؤنڈیشن کے تعاون سے منعقد کیا جاتا ہے۔

30 مختلف ممالک بسشمول بھارت، ترکی، جرمنی، ہالینڈ، امریکہ، برطانیہ، اٹلی، ٹیونس، بنگلہ دیش اور فرانس کے نمائندے، اس کانفرنس میں حصہ لیں گے۔

واضح رہے کہ کانفرنس کے تین اہم موضوعات میں ایرانی طب، قدیم ایران میں طبی تاریخ اور اسلامی تہذیب کے عہد میں طبی تاریخ شامل ہیں۔ 29 ایرانی اور غیر ملکی سائنسدان اس کانفرنس میں سائنسی لیکچرز پیش کریں گے اور اس کانفرنس کے چار خصوصی پینل بھی شیراز میں منعقد ہوں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 6 =