روس کا عالمی جوہری معاہدے کی صورتحال پر تشویش کا اظہار

ماسکو، ارنا – عالمی ایٹمی توانائی ادارے میں تعینات روسی مندوب نے کہا ہے کہ ہم جوہری معاہدے کی موجودہ صورتحال سے خوش نہیں اور اس بات کا امکان ہے کہ حالیہ اقدامات سے اس معاہدے کا خاتمہ ہوجائے.

یہ بات "میخائیل اولیانوف" نے پیر کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ عالمی جوہری معاہدہ بہت ہی اہم ہے جس پر دستخط کرنے کے لئے دس سال سے زائد کوششیں کی گئی ہیں. اس معاہدے نے ثابت کردیا کہ سیاسی اور اسٹریٹجک طریقے کے ساتھ عدم پھیلاو کے سلسلے میں مسائل حل ہوں گے اور جنگ کی ضرورت نہیں ہے.
اولیانوف نے کہا کہ جوہری معاہدہ مشرق وسطی کی واحد کامیابی ہے جس نے ایٹمی ہتھیار کے عدم پھیلاو کی طاقتور بنا دیا اسی لئے امریکہ اس معاہدے کے خلاف اپنے مواقف کے ساتھ مزید تنہائی کا شکار ہوگیا ہے.
انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کی صورتحال پر صرف امریکہ کو ہی قصوروار ٹھہرانا ہے اور وائٹ ہاؤس کے حکام اس کی ذمہ دار ہیں کیونکہ انہوں نے حالیہ سالوں کے دوران اس معاہدے کے خاتمے اور سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 اور اقوام متحدہ کے چارٹر نمبر 25 کی ناکامی کے لئے کوشش کیں.
تفصیلات کے مطابق، ایران کے صدر مملکت "حسن روحانی" نے حالیہ دنوں میں جوہری وعدوں کی کمی لانے کے چوتھے مرحلے کے آغاز کا اعلان کردیا ہے کہ یہ مرحلے دوسرے مرحلوں کی طرح قابل واپسی ہے اور جب دوسرے فریقین اپنے وعدوں پر مکمل کریں تو ہم بھی اپنے وعدوں پر واپس آ جائیں گے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 11 =