ایرانی ادویات کیخلاف پابندیوں کے بُرے اثرات کے دستاویزات کا فراہم کیا جائے: عالمی ریڈ کراس کمیٹی

مشہد، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران میں قائم عالمی ریڈ کراس کمیٹی کے دفتر کے سربراہ نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو ایرانی ادویات کیخلاف پابندیوں کے بُرے اثرات کے دستاویزات کا فراہم کرنا ہوگا۔

"رتو اشتوگر" نے پیر کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ پابندیوں سے بیمار افراد کو متاثر نہیں ہونا چاہیے لیکن یہ بات واضح ہے کہ پابندیوں کا ایران میں بعض بیماریوں کے شکار افراد پر منفی اثر پڑا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے گزشتہ دہائیوں کے دوران اور پابندیوں کے باوجود مختلف شعبوں بالخصوص انسانہ دوستانہ اقدامات کے حوالے سے کافی ترقی کی ہے۔

رتو اشتوگر نے مزید کہا کہ بہتر ہے کہ ایران، ادویات کے خلاف پابندیوں کے نتیجے میں انتقال کیے گئے افراد اور بیماروں پر اس کے منفی اثرات کے دستاویزات کا فراہم کرے کیونکہ بیماروں کی زندگی کو خطرے میں ڈالنے کے پیش نظر ادویات کیخلاف پابندیاں، غیر قابل قبول ہے۔

انہوں نے مزید کہ کہ بحیرہ روم میں مرنے والے شامی بچے کی تصویر ایک ایسی تصویر تھی جس نے عالمی برادری کو بہت متاثر کیا، لہذا ایران کو بھی ادویات کیخلاف عائد پابندیوں کے نتائج کو دستاویز کرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے ایرانی ریڈ کریسنٹ کمیٹی کی کارکردگی کو تعمیری قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، ملک میں پناہ گزینوں کیلئے سہولیات کی فراہمی پر کافی اچھے اقدامات کیے ہیں اور یہ ایرانی قوم کے مہمان نوازی کے کلچر کی وجہ ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 0 =