ایران میں ترقی یافتہ جدید نسل کے سنٹری فیوجز IR6 میں گیس انجیکشن کے عمل کا آغاز

تہران، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے نطنز جوہری پاور پلانٹ میں ترقی یافتہ جدید نسل کے سنٹری فیوجز IR6 میں گیس انجیکشن کےعمل کا آغاز کیا گیا جس کی تقریب میں ایرانی ایٹمی توانائی ادارے کے سربراہ بھی شریک تھے۔

 منعقدہ تقریب میں خطاب کرتے ہوئے "علی اکبر صالحی" نے کہا کہ اب نطنز جوہری پاورپلانٹ میں قائم "شہید احمدی روشن" کمپلیکس میں 30 کڑیوں پر مشتمل IR6 مشینوں کا آپریشنل کردیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ دومہینوں کے دوران، تنصیب کیے گئے سنٹری فیوجز میں سے تقریبا 15 جدید نسل کے سنٹری فیوجز شامل ہیں جسے بہت بڑی کامیابی سمجھا جاتا ہے۔

صالحی نے مزید کہا کہ انہی دو مہینوں کے دوران، سنٹری فیوجز مشینوں کے ذریعے مواد کو ایک دوسرے سے الگ کرنے کی طاقت (SWU) میں مزید اضافہ ہوگیا ہے اور 2 ہزار 600 SWU سے 8 ہزار 660 SWU تک پہنچ گئی ہے۔

 ایرانی ایٹمی ادارے کے سربراہ نے مزید کہا کہ جوہری وعدوں میں کمی لانے کے تیسرے مرحلے سے پہلے ایرانی یورینیم کی پیداوار روزانہ 450 گرم کی تھی مگر ابھی اس کی مقدار روزانہ 5 ہزار گرم سے زائد ہوچکی ہے۔

انہوں نے ایٹمی ادارے میں سرگرم 15 ہزار اہلکاروں کی کوششوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ آج تین افتتاحی تقریبوں کا انعقاد ہوگا جن میں سے ایک 30 درمیانی کڑیوں پر مشتمل IR6 مشینوں کا آپریشنل ہے جس کی 20 کڑیوں پر مشتمل مشنیز کی تنصیب کا عمل جنوری مہینے میں کیا گیا تھا۔

صالحی نے مزید کہا کہ ان پر مزید 10 کڑیوں پر مشتمل مشینز کی تنصیب بھی کی گئی تھی اور اب مجموعی طور پر IR6 مشینوں کی تعداد 60 تک پہنچ گئی ہیں اور مجموعی طور پر ان مشینوں کی صلاحیت میں 600 SWU اضافہ کیا گیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 3 =