ایرانی صدر، جوہری وعدوں کے چوتھے مرحلے کے نفاذ کا فیصلہ کریں گے

تہران، ارنا- ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ ابھی جوہری معاہدے کے وعدوں میں کمی لانے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے اور اس حوالے سے تفصیلی معلومات کا اعلان ایرانی صدر مملکت کیجانب سے ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار "علی ربیعی" نے ایران کیجانب سے جوہری معاہدے کے یورپی فریقین کیلئے 60 روزہ الٹی میٹم کے اختتام تک صرف 2 دن باقی رہنے اور یورپی فریقین کیجانب سے مناسب اقدام نہ اٹھانے کے تناظر میں جوہری وعدوں میں کمی لانے کی سطح سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت اس حوالے سے مزید تفصیلات سیمت اس کے نفاذ کے مقررہ تاریخ کا اعلان کریں گے۔

** سعودی عرب اور بحرین کے بادشاہوں کے نام میں ایرانی صدر کا خط

ربیعی نے ایرانی صدر کیجانب سے سعودی عرب اور بحرین کے بادشاہوں کے نام میں بھیجے گئے خط کے حوالے سے کہا کہ صدر روحانی کا اس اقدام، خطے میں قیام امن و استحکام سے متعلق اسلامی جمہوریہ ایران کے تعمیری موقف کے سلسلے میں ہے۔

ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا کہ ہمارا یقین ہے کہ ہم خطے میں متعدد باہمی تعلقات کو قائم کرسکتے ہیں۔

انہوں نے علاقائی ممالک کیساتھ ایران کے تجارتی تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں امریکی پابندیوں اور دباؤ کو ہمسایہ ممالک کے ساتھ  مشترکہ ثقافتی اور تہذیبی تعلقات پر بُرے اثرات مرتب کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔

ربیعی نے مزید کہا کہ ہمارا بدستور موقف یہ ہے کہ علاقے میں قیام امن کی فراہمی کیلئے باہمی تعاون ناگزیر ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 5 =