شنگہائی تنظیم کا اجتماعیت کو آگے بڑھانے میں اہم کردار ہے: ایرانی عہدیدار

تہران، ارنا – نائب سنیئر ایرانی صدر نے کہا ہے کہ بین الاقوامی نظام میں اجتماعیت کو آگے بڑھانے میں شنگہائی تعاون تنظیم کا اہم کردار ہے تو اس شعبے میں سرخیل ہو سکتی ہے.

یہ بات اسحاق جہانگیری نے ہفتہ کے روز ازبکستان میں منعقدہ شنگھائی تعاون تنظیم کے 18 ویں اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ ایران دہشت گردی کے خلاف جنگ اور بین الاقوامی امن و سلامتی کو یقینی بنانے کے لیےعلاقائی اور بین الاقوامی تعاون کو اہم سمجھتا اور اس مجرمانہ لعنت سے لڑنے کیلیے اجتماعی تعاون پر زور دیتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بڑی افسوس کی بات یہ ہے کہ امریکی حکومت کی دھمکی آمیز پالیسیوں سے متاثرہ بعض آزاد ممالک انسداد دہشت گردی کی پالیسیوں میں دوہرے معیار کا شکار ہیں.

انہوں نے کہا کہ ایرانی عوام پر امریکہ کی جانب سے ظالمانہ اور یکطرفہ پابندیوں کے عائد کرنے سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ امریکہ نے معاشی دہشتگردی کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کے چارٹر کے اصولوں کی سنگین خلاف ورزی کی ہے اور اس لئے عالمی برادری اس کے ذمہ دار ہے۔

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے سے امریکی دستبرداری کے بعد، اسلامی جمہوریہ ایران نے بار بار دوسری فریقوں کے ساتھ مذاکرات جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے اور ایک سال بعد ایران نے جوہری معاہدے سے متعلق اپنے وعدوں کو کم کرنے کا فیصلہ کیا۔ لیکن اب اگر دوسرے فریقین اپنی ذمہ داریوں کو نبھائیں تو ایران بھی دوبارہ جوہری معاہدے کے تحت اپنے تمام وعدوں پر من وعن عمل کرے گا.

انہوں نے کہا کہ ظاہر ہے کہ جوہری معاہدے کا تسلسل، تمام فریقین کی جانب سے وعدوں کی تکمیل و توازن اور اس معاہدے کے معاشی فوائد سے ایران کے لطف اندوز ہونے سے ہی ممکن ہو گا.

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ہمیشہ بین الاقوامی قوانین کے ایک تسلیم شدہ اصول کے طور پر شپنگ کی سیکورٹی پر زور دیا ہے اور آبنائے ہرمز میں شبنگ کا نظام، کسی بھی امتیازی سلوک کے بغیر تمام بحری جہازوں کی 'بےضرر ٹریفک' پر مبنی ہے.

انہوں نے کہا کہ ایران اس آبنائے اور آبی حدود کی حفاظت کے لیے کسی بھی ضروری اقدام کو اپنے خودمختار حقوق کا ایک حصہ سمجھتا ہے اور مفت شپنگ کو محفوظ بنانے کے لئے کسی بھی اقدام کو قبول نہیں کرے گا ۔

نائب ایرانی صدر نے کہا کہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے حالیہ اجلاس میں ایرانی صدر کی جانب سے پیش کردہ منصوبہ 'ہرمز کا امن منصوبہ' اجتماعی تعاون، پائیدار سلامتی،توانائی کے تبادلے، تجارتی تعلقات، شپنگ کے لیے ایک سنہری موقع ہے.

انہوں نے کہا کہ شنگہائی تعاون تنظیم کے تناظر میں ایران کا تعاون، پائیدار امن اور بقائے باہمی کے لیے اس بین الاقوامی اتحاد کے فروغ اور نئے مواقع پیدا کرنے کا باعث ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 15 =