13 اکتوبر، 2019 3:56 PM
Journalist ID: 2393
News Code: 83515738
0 Persons
تہران، تاریخی مقامات کا ایک قیمتی خزانہ ہے

تہران، ارنا - ہرچند تہران ایک ماڈرن شہر بن گیا ہے لیکن ابھی بھی ان کے تاریخی مقامات اس شہر کے قیمتی خزانے ہیں.

٭٭ مقدم کا میوزیم

احتساب الملک کی عمارت یا مقدم کا میوزیم عہد قاجار کے پُرتعیش مکانات میں سے ایک ہے جس کا تعلق اس زمانے کے ایک درباری 'محمد تقی خان احتساب الملک' سے تھا جس گھر کا رقبہ 2 ہزار اور 117مربع میٹر ہے.

٭٭ارباب ہرمز کا گھر

مجید آباد کی عمارت یا ارباب ہرمز کا گھر قاجاری دور حکومت کے اواخر سے متعلق ہے یہ عمارت سنہ 1384 شمسی کو قومی ورثے کی فہرست میں رجسٹر ہوچکی ہے.

1327 ہجری شمسی کو اس عمارت کا کل رقبہ 36 ملین مربع میٹر تھا جو اب اس سے صرف 42 ہزار مربع میٹر باقی ہے.

٭٭مسعودیہ کا محل

یہ عمارت قاجاری بادشاہوں کے دور حکومت سے متعلق ہے جو 1295 ہجری قمری میں قاجاری شہزادے 'مسعود میرزا ظل السلطان' کے حکم پر بنائی گئی اور 4 ہزار مربع میٹر کے رقبے پر محیط ہے۔

٭٭خداداد کا گھر، تماشاگہ کا میوزیم

یہ میوزیم قاجاری دور حکومت میں تہران کے ایک شہری 'حسین خداداد' سے متعلق تھا جس کا دوسرا نام خداداد کا گھر ہے.

٭٭سرای روشن کی عمارت

یہ عمارت تہران کے ناصر خسرو سڑک میں واقع ہے جو دور پہلوی سے متعلق ہے۔ اور 1311 ہجری شمسی میں تعمیر کی گئی ہے.

٭٭موتمن الاطباء کا گھر

اس گھر کا ایک عقلمند ایرانی طبیب 'مرزا زین العابدین دنبلی' سے ہے جس کا عرفی نام 'موتمن الاطباء' تھا وہ قاجاری بادشاہ 'ناصر الدین شاہ' کا طبیب تھا. یہ خوبصورت اور بے نظیر گھر 1379 کے شمسی سال میں قومی ورثے کی فہرست میں رجسٹر ہو چکا ہے.

٭٭سردار اسعد بختیاری کا تاریخی گھر

یہ تاریخی گھر ایل خانی سلطنت کے تاریخی اور نامور باغ کی باقیات میں سے ہے۔ یہ مکان تہران کے سب سے خوبصورت رہائشی مکانات کی حیثیت سے 1291 ہجری شمسی میں 'جعفر قلی خان بختیاری' کے اہتمام پر بنایا گیا.

٭٭دبیر الملک فراہانی کا گھر

دبیر الملک کا گھر قاجاری حکومت کی یادگاروں میں سے ایک ہے اور 'مرزا حسین خان فراہانی' (فخر الملک) سے تعلق رکھتا ہے. یہ گھر 150 سالہ پرانا ہے. اس گھر کو 1383 ہ ش میں قومی ثقافتی ورثے میں شامل کیا گیا.

٭٭عین الدولہ کا باغ

یہ باغ قاجاری سلطنت کے قیمتی مکانات میں سے ایک ہے جو قاجاری وزیر 'عین الدولہ' کی رہائش گاہ تھا.

معیر الممالک کی عمارت، فردوس کا باغ

یہ دو منزلہ عمارت 1264 ہجری شمسی کو قاجاری بادشاہ 'محمد شاہ قاجار' کے ایما پر بنائی گئی.

کوشک کی عمارت، شقاقی کا گھر

یہ مکان قاجاری دور حکومت کے اواخر سے متعلق ہے جو ملکی ثقافتی ورثے کی فہرست میں شامل ہے.

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 9 =