خطے کی کشیدہ صورتحال، امریکی پالیسیوں سے متاثر ہے: عراقچی

تہران، ارنا-  نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے کہا ہے کہ خلیج فارس میں حالیہ کشیدہ صورتحال، مداخلت پر مبنی امریکی پالیسیوں کی وجہ ہے اور پورے خطے میں قیام امن و سلامتی اور معیشت کی بحالی اسلامی جمہوریہ ایران کی ترجیحات میں سرفہرست ہے۔

ان خیالات کا اظہار "سید عباس عراقچی" نے ایران کے دورے پر آئے ہوئے پرتگالی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل برائے سیاسی امور "کوشتا پریرا" کیساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

پریرا نے ایران اور پرتگال کے درمیان سیاسی مذاکرات کے دوسرے دور میں حصہ لینے کیلئے ایران کا دورہ کیا ہے۔

اس موقع پر عراقچی نے ایران اور پرتگال کے درمیان 500 سالہ تاریخی تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے دونوں ملکوں کے درمیان تعلیمی شعبے میں باہمی تعاون کی سطح سے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اسے باہمی تعلقات کے فروغ میں ایک اہم سرمایہ قر ار دے دیا۔

انہوں نے اس نازک اور حساس صورتحال میں دوطرفہ تعلقات کو مستحکم کرنے کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھانے کی ضرورت پر زور دیا۔

نائب ایرانی وزیر خارجہ نے یورپی ممالک کیجانب امریکی یکطرفہ اقدامات کیخلاف اقدمات اٹھانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ خلیج فارس میں حالیہ کشیدہ صورتحال، مداخلت پر مبنی امریکی پالیسیوں کی وجہ ہے اور پورے خطے میں قیام امن و سلامتی اور معیشیت کی بحالی اسلامی جمہوریہ ایران کی ترجیحات میں سرفہرست ہے۔

 اس موقع پر پرتگالی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل برائے سیاسی امور نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک ایران سے باہمی تعلقات کے فروغ پر دلچسبی رکھتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یورپ، ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کا خواہاں ہے اور اس حوالے سے پرتگال کا موقف بھی یورپی یونین کے موقف کے قریب ہے۔

اس ملاقات میں دونوں فریقین نے باہمی دلچسبی امور سمیت بین علاقائی اور الاقوامی مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 2 =