6 اکتوبر، 2019 11:08 AM
Journalist ID: 2392
News Code: 83505040
0 Persons
افغانستان پڑوسی پالیسی میں ایران کی پہلی ترجیح

بیرجند، ارنا – افغانستان میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ افغانستان معیشتی مزاحمت، پڑوسی پالیسی، جہادی انتظامیہ اور برآمدات کے حجم میں ہماری پہلی ترجیح ہے.

یہ بات "بہادر امینیان" نے گزشتہ روز ایرانی صوبے خراسان جنوبی میں ایکسپورٹ ڈویلپمنٹ ٹاسک فورس اور بارڈر ٹریڈ آرگنائزیشن کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اس مقصد کو حاصل کرنے کے لئے سرحدی صوبے سمیت خراسان جنوبی اور سیستان و بلوچستان کو سرگرم عمل ہوں گے.
امینیان نے کہا کہ یوروپی ممالک کو ایران کی کل برآمدات کا حجم افغانستان کو ملکی برآمدات کا ایک تہائی نہیں ہیں لہذا یہ ملک ہمارے لئے بہت ہی اہم اور اس کی منصوبہ بندی کی ضرورت ہے.
انہوں نے کہا کہ اقتصادی سرگرم کارکنوں کو ملکی معیشتی مزاحمت اور پڑوسی پالیسی پر اہمیت دینا چاہیئے.
انہوں ںے ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات کو فروع دینے پر زور دیا اور کہا کہ پڑوسیوں کے ساتھ باہمی تعلقات ملک کی ترقی کا باعث بنیں گے.
ایرانی سفیر نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ دوطرفہ تعلقات بڑھانا ہماری پہلی خارجہ پالیسی ہے اور پڑوسی پالیسی کا مطلب یہ ہے کہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات پر کوئی خلل ڈال نہیں ہوگا.
انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور افغانستان ثقافت یافتہ ملک ہیں مگر اس ملک کے ساتھ ثقاتی تعلقات کو فروغ دینے کے لئے اقتصادی تعلقات بڑھانا نہایت اہم ہے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 9 =