ایرانی شہریوں کے معاملات میں فرانس کی مداخلت غیر قانونی ہے: ایران

تہران، ارنا - ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ فرانسیسی وزارت خارجہ کی جانب سے ایرانی شہریوں کے معاملات میں مداخلت کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ فرانس کے اس اقدام سے نہ صرف ان معاملات کو حل کرنے میں کوئی مدد نہیں ملے گی بلکہ اس سے عدالتی عمل مزید پیچیدہ ہوگا.

ان خیالات کا اظہار «سید عباس موسوی» نے فرانس میں ایک ایرانی شہری سے متعلق وہاں کے دفترخارجہ کی مداخلت پر مبنی حالیہ بیانات کے رد عمل میں کیا.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے قوانین کے مطابق ایرانی شہری کی دوہری شہریت تسلیم نہیں کیا گیا ہے لہذا خاتون ایرانی "عدالخواہ" ایرانی شہری ہے اور انھیں جمہوریہ ایران کے تمام شہری حقوق فراہم کیا گیا ہے۔

 موسوی نے مزید کہا کہ خاتون ایرانی شہری عادالخواہ کے کیس کو ایرانی عدالیہ اور ملک کے منصفانہ مقدمے کی سماعت کے قوانین کے دائرہ کار میں جائزہ لے رہے ہیں لہذا ایرانی شہریوں کے معاملات میں فرانس کی مداخلت  نہ صرف اس مسئلے کے حل میں کوئی مدد نہیں ملے گی بلکہ عدالتی عمل کو اور پیچیدہ بنائے گا۔

ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے فرانس کے اس اقدام کو اسلامی جمہوریہ ایران کے اندرونی معاملامت میں مداخلت قرار دے دیا۔

٭274**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@ 

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 1 =